24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاک - ہندوستان سیریز دسمبر میں ہوگی

۔—فائل فوٹو بشکریہ ثناء کاظمی

کراچی: پاکستانی کرکٹ ٹیم رواں سال دسمبر میں ہندوستان کا دورہ کرے گی۔ دورے میں تین ون ڈے اور دو ٹی ٹوئنٹی میچ متوقع ہیں ۔

ہندوستان کے کرکٹ بورڈ کے مطابق نئی دہلی نے  پاکستان کے دورے کی منظوری دے دی ہے۔

واضح رہے کہ دو ہزار آٹھ میں ممبئی حملوں کے بعد پاکستان اور ہندوستان کے درمیان یہ پہلی سیریز ہوگی۔

ذرائع کے مطابق دونوں ملکوں کے بورڈ حکام نے اتفاق کیا ہے کہ گرین شرٹس کرسمس کی چھٹیوں کے دوران ہندوستان کا دورہ کرے گی۔ دورے میں تین ون ڈے میچوں کے علاوہ دو ٹی ٹوئنٹی میچز بھی کھیلے جاسکتے ہیں۔

ان میچوں کا انعقاد ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان ہونے والی سیریز کے وقفے کے دوران ہوگا کیونکہ انگلینڈ کی ٹیم ٹیسٹ میچوں‌ کے بعد کرسمس منانے واپس وطن جائے گی اور بقیہ سیریز جنوری میں آکر کھیلے گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین ذکاء اشرف نے سیریز کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کرکٹ سے دونوں ملکوں کے سیاسی تعلقات بہتر ہوسکتے ہیں۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو میں اشرف نے کہا کہ ہندوستانی کرکٹ بورڈ نے انکی چھ ماہ سے جاری کوششوں کا مثبت جواب دیا ہے۔

انہوں نے پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کے حوالے سے کہا کہ انکی کوشش ہوگی کہ پاکستان میں عالمی کرکٹ جلد بحال ہو۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر صوبائی حکومتیں سیکیورٹی کی ذمہ داری لیں تو ٹیمیں پاکستان آکر کھیلنے کو تیار ہیں۔

اس حصے سے مزید

پاکستان کی ڈومیسٹک لیگ کا نیا منصوبہ متعارف

پاکستانی کرکٹ کی انتظامیہ نے ڈومیسٹک لیگ کے ڈھانچے میں تبدیلیاں کرتے ہوئے دو ڈویژنز پر مشتمل نیا منصوبہ متعارف کرایا ہے

پاکستان کرکٹ کے نئے آئین کا خواب شرمندہ تعبیر

بالآخر پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کے نئے آزاد آئینی مسودہ کی نقل منگل کو منظر عام پر آ گئی ہے۔

پاکستانی کرکٹروں کو پھنسانے والا رپورٹر معطل

مظہر محمود عرف 'جعلی شیخ' کی معطلی کا فیصلہ لندن کی ایک عدالت میں جھوٹ بولنے کے الزامات لگنے کے بعد ہوا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-