19 ستمبر, 2014 | 23 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پنجاب، گلگت بلتستان میں ٹریفک حادثے، بیس افراد ہلاک

امدادی کارکن۔ اے ایف پی فوٹو

اسلام آباد: آج صبح ملک کے مختلف شہروں میں ہونے والے تین مختلف ٹریفک حادثات میں بیس افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے۔ اطلاعات کے مطابق زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک ہے۔

ہلاکتوں کا سبب بنے والے حادثات راولپنڈی، استور اور میرپور کے قریب پیش آئے۔

تفصیلات کے مطابق منگل کی صبح نہڑ سے راولپنڈی جانے والی ایک مسافر بس کہوٹہ کے قریب گاؤں پنجاڑ کے قریب کھائی میں جاگری۔

ریسکیو ذرائع کے مطابق حادثے کے وقت بس میں کم ازکم ستر مسافرسوار تھے، جن میں سے چھ افراد موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔ پانچ زخمی اسپتال منتقل کیے جانے کے دوران دم توڑ گئے۔

اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ زخمیوں کی تعداد بیس ہے، جن میں سے چند کی حالت نازک ہے۔

پولیس نے ابتدائی طور پر کہا ہے کہ حادثہ تیز رفتاری کے باعث پیش آیا۔

دوسرا المناک حادثہ گلگت بلتستان کے علاقے استور میں پیش آیا، جہاں مسافر ویگن دریائے پری شنگ میں جاگری،جس کے نتیجے میں آٹھ افراد ہلاک اور بیس زخمی ہوگئے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ حادثے کے وقت ویگن میں گنجائش سے زیادہ مسافر سوار تھے۔ پولیس کے مطابق ایک موقع پراووَر لوڈنگ کے باعث ڈرائیور ویگن پر قابو نہ رکھ سکا اور وہ دریا میں جاگری۔

مقامی افراد اور پولیس اہلکاروں نے امدادی کارروائیاں کرتے ہوئے تمام زخمیوں اور لاشوں کو سول اسپتال، استور منتقل کردیا، جہاں اسپتال حکام کے مطابق زخمیوں میں سے بیشتر کی حالت نازک ہے۔

علاوہ ازیں،آزاد کشمیر کے علاقے میرپور سے دینہ جانے والی کار تیز رفتاری کے باعث درخت سے ٹکراگئی، جس کے باعث ایک خاتون ہلاک اور تین افراد زخمی ہوگئے۔

دوسری طرف، ایوان صدر سے جاری بیان کے مطابق صدر آصف علی زرداری نے آج صبح پیش آنے والے المناک ٹریفک حادثات میں ہونے والی ہلاکتوں گہرے دکھ  کا اظہار کیا ہے۔

اس حصے سے مزید

'ایمرجنسی کا ریکارڈ پرویز مشرف کے عملے نے غائب کردیا تھا'

غداری کے مقدمے کی سماعت کے دوران تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ خالد قریشی نے یہ بیان خصوصی عدالت کے سامنے دیا۔

حکومت دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی سے مطمئن

وزیراعظم نے اپنی حد تک ہر ممکن بہترین کوششیں کرکے یہ صورتحال پیدا کی اور اب اپنی حکومت معمول کے مطابق چلارہے ہیں۔

یوم نجات کے لیے پی ٹی آئی اور انتظامیہ کی تیاریاں

یوم نجات منانے کے اعلان کے بعد سے پی ٹی آئی اور انتظامیہ نے طاقت کے اس مظاہرے کے لیے اپنی اپنی تیاریاں شروع کردی ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔