28 اگست, 2014 | 1 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

رحمٰن ملک دوبارہ وفاقی وزیر داخلہ بن گئے

سینیٹ۔فائل فوٹو

اسلام آباد: رحمان ملک آج سینیٹر کا حلف اٹھانے کے بعد ایک مرتبہ پھر وفاقی وزیر داخلہ بن گئے ہیں۔

حلف برداری کی تقریب ایوان صدر میں ہوئی جہاں صدر آصف علی زردری نے ان سے وفاقی وزیر کا حلف لیا۔

قبل ازیں، آج نیئر حسین بخاری کی زیر صدارت سینٹ کا اجلاس ہوا جس میں نومنتخب سینیٹر رحمان ملک نےحلف اٹھایا۔

مسلم لیگ ن نے رحمان ملک کی حلف برداری کیلئے سینیٹ کا ہنگامی اجلاس بلانے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے اجلاس سے واک آؤٹ کیا۔

خیال رہے کہ دہری شہریت کے تنازعے کے باعث رحمان ملک نے سینیٹر کی رکنیت سے استعفی دے دیا تھا، جس کے بعد انہیں سینئر مشیر بنایا گیا تھا۔

رحمان ملک بعد میں سینٹ کے بلامقابلہ رکن منتخب ہونے میں کامیاب ہوئے تھے۔

 

اس حصے سے مزید

عمران خان کو نائب وزیراعظم کی پیشکش کس نے کی؟

پی ٹی آئی چیئرمین کا یہ انکشاف اسلام آباد میں جاری سیاسی بحران پر نظر رکھی ہوئی شخصیات کے لیے حیرت کا باعث بنا۔

عوام کے فیصلےکا دن آگیا،آج یوم انقلاب ہو گا،طاہر القادری

سربراہ پاکستان عوامی تحریک نےکہا ہےکہ اب مذاکرات کادروازہ بند ہو گیا ہے، جمعرات کو یوم انقلاب ہوگا اب ہم فیصلہ کریں گے۔

ہم اس نظام کےخلاف بغاوت کرتےہیں،عمران خان

چیئرمین تحریک انصاف کےمطابق اہم اعلان 24 گھنٹے کیلئے ملتوی کررہاہوں،مزیدمذاکرات نہیں ہوں گےآج ہی لائحہ عمل کااعلان ہوگا


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

دو کشتیوں کے سوار نواز شریف

نواز شریف کے مطابق اگر ان کو طاقت کے زور پر نکالا گیا تو پاکستان کو سنبھالنا مشکل ہوجائے گا۔

پاکستان میں جمہوریت

کیا جمہوریت پاکستان میں عوام کیلیے ہے یا حکمرانوں کو انتخابات میں دوبارہ منتخب ہونے کی یقین دہانی کیلیے ہے؟

بلاگ

آزادی کے سائیڈ افیکٹس

اس قوم کا مزید آزادی کی بات کرنا بہت حیران کن ہے۔ یہ قوم تو آزادی کے سائیڈ افیکٹس کا شکار ہے۔

'آزادی' کے بعد: 'نیا پاکستان' اور 'انقلابی کابینہ'

سب سے زیادہ توجہ میڈیا پر دینی ہوگی اور گندی مچھلیوں سے پاک کرنے کے لئے تمام 'ملک دشمن' چینلز پر فوری پابندی لگانی ہوگی

مووی ریویو: ٹین ایج میوٹنٹ ننجا ٹرٹلز

تباہی و بربادی کے سینز، سپر ہیروز اور ایک حسینہ والے کامیاب ثابت شدہ فارمولے فلم کا حصہ رہے۔

تجزیوں کا بخار

گھر کے تمام افراد کو اتنے گروپس میں تقسیم کیا جا سکتا ہے، جتنے کہ تجزیہ کار موجود ہیں۔