18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

شام: اقوام متحدہ کے قافلے پر حملہ

تصویر میں جنرل باباکر (الٹے ہاتھ سے دوسرے نمبر پر) ۔اے ایف پی فوٹو

اقوام متحدہ: اقوام متحدہ کے رہنما بان کی مون نے پیر کے روز شام میں اقوام متحدہ کے غیر مسلح مبصرین کے ایک قافلے پر حملے لی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے حکومتی فورسز کی جانب سے بڑے پیمانے پر قتل عام میں اضافے کے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

اقوام متحدہ امن فوج کی خاتون ترجمان کا کہنا تھا کہ پانچ گاڑیوں پر مشتمل قافلہ اقوام متحدہ مشن کے سربراہ جنرل باباکرگے کو لے جارہا تھا جب احتجاجی مظاہروں کے مرکزی شہر حمص کے نزدیک اس پر چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ کی گئی۔

البتہ بان نے اتوار کو ہونے والے حملے کا اعلان کرتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ خوش قسمتی سے اس میں کوئی زخمی نہیں ہوا ۔

ترجمان جوزفین گیوریرو نے اے ایف پی کو بتایا کہ قافلہ حمص شہر سے گزررہا تھا جب تلبیسا گاؤں میں ایک گاڑی کو تین گولیوں اور دوسری کو ایک گولی سے نشانہ بنایا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ قافلہ پانچ گاڑیوں پر مشتمل تھا جس میں جنرل گے سوار تھے۔

اقوام متحدہ کے حکام کا کہنا ہے کہ یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ  فائرنگ کس نے کی تھی۔

دمشق میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جنرل باباکر نے بتایا کہ وہ ایک ہفتہ قبل شام میں اقوام متحدہ کے نگران مشن (یو این ایس ایم آئی ایس) کا چارج سنبھالنے کے بعد سے اپنا پہلا دورہ کررہے تھے۔

بان نے صدر بشار الاسد سے حمص اور حلب شہر پر جو کہ نئے بڑے حملے کا ہدف ہیں ،تشدد اقدامات روکنے کے لئے نئی اپیل کی ہے۔

بان کا کہنا تھا کہ ہمیں اس بارے گہری تشویش لاحق ہے کہ فوجی طیاروں اور لڑاکا ہیلی کاپٹرز اور بھاری ہتھیاروں سمیت ہرقسم کا سازوسامان کا استعمال ہورہا ہے جو کہ ناقابل قبول ہے ۔ اس کے علاوہ یہ صورت حال دن بہ دن بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے۔

اس حصے سے مزید

نائجیریا میں چرچ منہدم، 40 افراد ہلاک

نائجیریا میں ایک چرچ کے منہدم ہونے کے نتیجے میں کم از کم 40 افراد ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوگئے۔

صومالیہ: الشباب کے جنگجوئوں کیلئے معافی کا اعلان

حکومتی اعلان کا مقصد انتشار ختم کرنا ہے،45روز میں جو جنگجو عسکریت پسندی ترک کردیں گے ان کو معاشرے کا حصہ بنایا جائے گا.

بوکو حرام کا اسلامی ریاست کا اعلان

بوکو حرام کے رہنما ابوبکر شیکاؤ نے ایک وڈیو میں اسلامی ریاست کے قیام کا اعلان کیا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔