18 اپريل, 2014 | 17 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

شام: اقوام متحدہ کے قافلے پر حملہ

تصویر میں جنرل باباکر (الٹے ہاتھ سے دوسرے نمبر پر) ۔اے ایف پی فوٹو

اقوام متحدہ: اقوام متحدہ کے رہنما بان کی مون نے پیر کے روز شام میں اقوام متحدہ کے غیر مسلح مبصرین کے ایک قافلے پر حملے لی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے حکومتی فورسز کی جانب سے بڑے پیمانے پر قتل عام میں اضافے کے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

اقوام متحدہ امن فوج کی خاتون ترجمان کا کہنا تھا کہ پانچ گاڑیوں پر مشتمل قافلہ اقوام متحدہ مشن کے سربراہ جنرل باباکرگے کو لے جارہا تھا جب احتجاجی مظاہروں کے مرکزی شہر حمص کے نزدیک اس پر چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ کی گئی۔

البتہ بان نے اتوار کو ہونے والے حملے کا اعلان کرتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ خوش قسمتی سے اس میں کوئی زخمی نہیں ہوا ۔

ترجمان جوزفین گیوریرو نے اے ایف پی کو بتایا کہ قافلہ حمص شہر سے گزررہا تھا جب تلبیسا گاؤں میں ایک گاڑی کو تین گولیوں اور دوسری کو ایک گولی سے نشانہ بنایا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ قافلہ پانچ گاڑیوں پر مشتمل تھا جس میں جنرل گے سوار تھے۔

اقوام متحدہ کے حکام کا کہنا ہے کہ یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ  فائرنگ کس نے کی تھی۔

دمشق میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جنرل باباکر نے بتایا کہ وہ ایک ہفتہ قبل شام میں اقوام متحدہ کے نگران مشن (یو این ایس ایم آئی ایس) کا چارج سنبھالنے کے بعد سے اپنا پہلا دورہ کررہے تھے۔

بان نے صدر بشار الاسد سے حمص اور حلب شہر پر جو کہ نئے بڑے حملے کا ہدف ہیں ،تشدد اقدامات روکنے کے لئے نئی اپیل کی ہے۔

بان کا کہنا تھا کہ ہمیں اس بارے گہری تشویش لاحق ہے کہ فوجی طیاروں اور لڑاکا ہیلی کاپٹرز اور بھاری ہتھیاروں سمیت ہرقسم کا سازوسامان کا استعمال ہورہا ہے جو کہ ناقابل قبول ہے ۔ اس کے علاوہ یہ صورت حال دن بہ دن بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے۔

اس حصے سے مزید

نیروبی دھماکوں میں چھ افراد ہلاک

ذیادہ آبادی والے ایک علاقے میں دو ہوٹلوں اور ایک کلینک میں لگاتار دھماکے ، پچیس افراد زخمی ۔

نائیجیریا: عسکریت پسندوں کا کالج پر حملہ، 43 ہلاک

شدت پسندوں نے کالج کی رہائشی عمارت پر گولہ باری کرنے کے بعد فائرنگ کی اور طالب علموں کو چھریوں کے وار سے بھی ہلاک کیا۔

شمالی نائیجیریا میں بوکو حرم کا حملہ، 60 ہلاک

حملے کے بعد فضائیہ کے جیٹ طیاروں نے بھاگتے ہوئے عسکریت پسندوں کو نشانہ بنایا اور انہیں ہلاک کیا گیا۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔