02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی: تین افراد ہلاک، رینجرز اور پولیس ایکشن میں

کراچی میں پرتشدد واقعات کا سلسلہ جاری۔ رائٹرز تصویر

کراچی: کراچی میں کل رات سے اب تک تین افراد کو قتل کر دیا گیا۔ رینجرز کے بعد اب پولیس بھی ایکشن میں آگئی اور سرچ آپریشن شروع کردیا گیا ہے۔

علاوہ ازیں کراچی میں اورنگی ٹاون کے علاقے مییں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے تین افراد زخمی ہوگئے۔ زخمیوں کو نجی اسپتال منتقل کیاگیا جہاں ایک زخمی دوران علاج چل بسا۔

بلدیہ ٹاؤن میں فائرنگ سے دو افراد ہلاک ہوئے۔

دوسری جانب پرانی سبزی منڈی کے قریب پولیس نے سرچ آپریشن کے دوران تین مشتبہ افراد کو حراست میں لے کر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔

آپریشن میں پولیس کمانڈوز نے بھی حصہ لیا۔

ذرائع کے مطابق یہ آپریشن گینگ وار کے ملزمان کی موجودگی کی اطلاع پر کیا گیا۔

اس حصے سے مزید

وزیراعظم، وزیرداخلہ کی نااہلی کے لیے درخواست دائر

سندھ ہائی کورٹ میں دائر درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ نواز شریف کو آرٹیکل باسٹھ اور تریسٹھ کے تحت نااہل قرار دیا جائے

کراچی: دو پولیس اہلکار ٹارگٹ کلنگ میں ہلاک

آج صبح نامعلوم دہشت گردوں نے گشت پر مامور موٹر سائکل سوار پولیس اہلکاروں کو فائرنگ کا نشانہ بنایا۔

اسلام آباد احتجاج میں ایم کیو ایم کی شرکت کا امکان

متحدہ قومی موومنٹ کے فاروق ستار کا کہنا ہے کہ اگر حکومت نے مظاہرین پر تشدد کا جاری رکھا تو ہمیں بھی سڑکوں پر آنا پڑے گا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔