16 اپريل, 2014 | 15 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

کابل میں بم دھماکہ، آٹھ افراد ہلاک

افغانستان میں لوگ تباہ حال گھر کے قریب کھٹرے ہیں۔ اے ایف پی فوٹو

کابل: طالبان عسکریت پسندوں کی طرف سے نصب کیے گئے ایک ریمورٹ کنٹرول بم سے افغانستان کے دارلحکومت میں منگل کے روز آٹھ افراد ہلاک ہوگئے۔

کابل پولیس کے سربراہ جنرل ایوب نے اے ایف پی کو بتایا کہ صبح پانچ بجے پکھامان ضلع میں ریمورٹ کنٹرول بم سے ایک سویلین بس پر حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں آٹھ افراد ہلاک اور ایک زخمی ہوا۔

جنرل ایوب کا کہنا تھا کہ بم نصب کرنے والے آدمی کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ اس شخص کا تعلق طالبان سے ہے۔

انھوں نے مزید بتایا کہ ہلاک ہونے والے مرد ہیں جو صبح اپنے اپنے کاموں پر پہنچنے کے لیئے جارہے تھے۔

ویسے تو سٹرک کنارے بم نصب کرنا طالبان کی طرف سے ہونے والے حملوں کا ہی طریقہ کار ہے لیکن افغان دارلحکومت میں اس طرح کے واقعات کم ہوتے ہیں۔

نیٹو کے انٹرنیشنل سیکیورٹی اسسٹنس فورس (ایساف) جس کے ایک سو تیس فوجی افغانستان میں طالبان کے خلاف چجڑی جنگ میں افغان حکومت کی مدد کررہے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ پچھلے کچھ مہینوں سے اس نوعیت کے حملے زیادہ دیکھنے میں آرہے ہیں۔

اس حصے سے مزید

افغان انتخابات: ابتدائی نتائج میں عبداللہ عبداللہ پہلے نمبر پر

الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری ان نتائج کے مطابق اشرف عنی دوسرے اور زلمے رسول تیسرے نمبر پر ہیں۔

افغان صدارتی انتخابات کے بعد ووٹوں کی گنتی جاری

پاکستان سمیت دنیا بھر نے افغانستان میں صدارتی انتخابات کی تکمیل کا خیرمقدم۔

پرامن افغان صدارتی انتخابات ختم، بھاری ٹرن آؤٹ متوقع

امریکی صدر باراک اوباما نے افغان عوام کو انتخابات میں بڑی تعداد میں شرکت پر مبارکباد دیتے ہوئے تاریخی سنگ میل قرار دیا۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

میڈیا کے چٹخارے

پاکستانی میڈیا کو جتنی زیادہ آزادی ہے اسکی اپروچ اتنی ہی جانبدارانہ ہے، عوام کی پولرائزیشن میں میڈیا کا بہت بڑا ہاتھ ہے

ٹی ٹی پی نہیں تو پھر مذاکرات کیوں؟

عام آدمی کو صرف تحفظ چاہئے اور اگر مذاکرات یہ نہیں دے رہے تو ان کو مزید آگے بڑھانے سے کیا حاصل؟

جادو کا چراغ: نبض کے بھید اور ایک برباد محبت

بوڑھے دانا طبیب نے مختلف ناموں پر بدلتی نبض کو دیکھ کر لڑکی کی پراسرار بیماری کا علاج کیا-

سارے جہاں سے مہنگا - ریویو

فلم میں ایک اچھوتا خیال پیش کیا گیا ہے کہ کس طرح 'جگاڑ' کر کے ایک مڈل کلاس آدمی مہنگائی کا توڑ نکالتا ہے۔