29 اگست, 2014 | 2 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

ملک ریاض پر فرد جرم عائد

سپریم کورٹ کی عمارت کا ایک منظر۔۔—اے ایف پی تصویر

اسلام آباد: بحریہ ٹاؤن کے سابق چیرمین ملک ریاض کے خلاف توہین عدالت کیس میں فرد جرم عائد کردی گئی۔ البتہ اٹارنی جنرل نے فرد جرم عائد کرنے پر اعتراض کردیا ہے۔

اس کے علاوہ ملک ریاض نے بھی صحت جرم سے انکار کیا ہے۔

ملک ریاض پر یہ فرد ایک پریس کانفرنس میں عدلیہ پر الزامات لگانے پر عائد کی گئی ہے۔ کیس کی مزید سماعت انتیس اگست کو ہوگی۔

سپریم کورٹ میں ملک ریاض نے  انٹرا کورٹ اپیل دائر کردی۔

میاں جسٹس شاکراللہ جان کی سربراہی میں عدالت عظمی کے تین رکنی بنچ ملک ریاض کے خلاف تو  ہین عدالت کیس کی سماعت کر رہا ہے۔

سماعت کے دوران ڈاکٹر عبدالباسط نے عدالت کو کہا کہ انٹرا کورٹ اپیل پر فیصلے تک توہین عدالت کی کاراوئی روک دی جائے۔

اس پر بنچ  میں موجود جسٹس اعجاز افضل کا کہان تھا کہ نیا قانون اب ختم ہوگیا ہے اور موجودہ قانون میں کاوائی جاری رکھی جاسکتی ہے۔

جسٹس اعجاز افضل نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ توہین عدالت ایکٹ دوہزار بارہ کو ایسا تصور کیا جائے جیسا کہ وہ تھا ہی نہیں۔

ڈاکٹر باسط کا کہنا تھا کہ جس دن انٹرا کورٹ اپیل دائر ہوئی اس دن توہین عدالت کا نیا قانون لاگو تھا۔

انھوں نے کہا کہ اپیل  کے آتے ہی شوکاز نوٹس اور توہین عدالت کی کاروائی معطل ہوگئی تھی۔

ڈاکٹر باسط نے عدالت سے استدعا کی کہ عید کے بعد تک کیس کی سماعت ملتوی کیا جائے۔

اس پر جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا کہ پہلے فرد جرم عائد کرینگے اور اس کے بعد سماعت بھی ملتوی کرینگے۔

جسٹس اعجاز افضل نے کہا کہ کیا قباحت  ہے کہ اگر آج فرد جرم عائد کی جائے۔

ڈاکٹر باسط نے کہا اس سے میرا انٹرا کورٹ کا حق متاثر ہو جائے  گا۔

اس پر جسٹس جواد اس خواجہ نے کہا کہ آپ  کے انٹرا کورٹ کی اپیل کی سماعت چلتی رہے گی۔

اس حصے سے مزید

آرمی چیف نے عدالتی کمیشن بنانے کی ضمانت دی ہے، عمران خان

جب تک وزیراعظم نواز شریف کا استعفیٰ نہیں آتا، دھرنا جاری رہےگا، سربراہ پاکستان تحریک انصاف۔

نظام ختم ہوا تو بڑی تباہی ہوگی،وفاقی وزیر دفاع

خواجہ آصف نےکہا ہےکہ اگرنظام لپیٹا گیا تواکائیوں کو ساتھ رہنے کاجواز نہیں رہتا،آئین نے پاکستان کو متحدہ رکھا ہوا ہے۔

'درست ایف آئی آر اور شریف برادران کے استعفوں پرکوئی سمجھوتہ نہیں'

اگر نواز شریف اور شہباز شریف نے استعفی نہیں دیا تو 'دما دم مست قلندر' ہوگا، طاہر القادری۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

متوازی سیاست

بعض لحاظ سے ان میں اور ان لوگوں میں کوئی بہت زیادہ فرق نہیں ہے جنھیِں وہ ہٹانا چاہتے ہیں-

انتخابی اصلاحات کی فوری ضرورت

پاکستان میں انتخابی عمل کوشفاف اور غیر متنازعہ بنانے کے لیے انتخابات کے آٹھ شعبوں میں اصلاحات کی ضرورت ہے۔

بلاگ

پاکستان کی نوجوان نسل اور غیرت بریگیڈ

"فحاشی" ایک دماغی بیماری ہے جس کا شکار ذہن عورت کو گھر کی دہلیز سے باہر دیکھ کر شدید 'صدمے' کا شکار ہو جاتا ہے۔

ڈی چوک، گدھا اور نا تجربہ کار حجام

آپ کے لیڈر رہیں یا چلے جائیں، یا رسی سے گدھا بندھا ہو یا نہیں، لیکن کسی نا تجربہ کار شخص کو اپنی حجامت مت بنانے دیجئے گا

دھرنے بمقابلہ جمہوریت

جمہوریت میں ہر بندے کی رائے برابر کی اہمیت رکھتی ہے۔ ممکن ہے کہ وہ سیاست دان بھی منتخب ہوجائیں، جو لیڈرشپ کے قابل نہیں۔

آزادی کے سائیڈ افیکٹس

اس قوم کا مزید آزادی کی بات کرنا بہت حیران کن ہے۔ یہ قوم تو آزادی کے سائیڈ افیکٹس کا شکار ہے۔