02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

عمران خان ایک بار پھر چوہدری نثار کی تنقید کا شکار

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نثارعلی خان جمعرات کے روز پریس کانفرنس کے دوران۔ – آئی این پی فوٹو

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نثار نے ایک بار پھر تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کو ٹیکس چور قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے اپنے اثاثے چھپائے ہیں۔ اوران پر لگائے گئے الزامات غلط ہیں تو عدالتوں میں لے جائیں۔

جمعرات کے روز بھی تحریک انصاف اور ملسم لیگ ن کا ایک دوسرے کے خلاف دھواں دھار الزامات لگانے کا سلسلسہ جاری رہا۔

ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ عمران خان صرف ن لیگ اور میاں نواز شریف پر الزامات لگاتے ہیں اور اب وہ یہ الزام تراشی کی سیاست بند کردیں۔

گزشتہ روز تحریک انصاف کے سربراہ عمران  خان  نے کہا تھا کہ شوکت خانم کے خلاف لگائے گئے الزامات پر وہ عدالت سے رجوع کریں گے۔

اس سے قبل قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نے نثار نے عمران خان اور رحمان ملک کے ایجنڈے کو ایک قرار دیا تھا۔ انکا کہنا تھا کہ عمران خان بہادر بنتے ہیں لیکن میدان کے آدمی نہیں ہیں، چیلنج کرکے بھاگ گئے۔

چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ عمران خان کو آصف زرداری پر لگے الزامات نظر کیوں نہیں آتے، شوکت خانم کے پیچھے چھپنے سے بھی کچھ نہ ہوگا۔

مسلم لیگ ن کے رہنماء کا مزید کہنا تھا کہ غصےسےکوئی بڑا لیڈر نہیں بن جاتا، اور تمام سیاسی جماعتوں کومسائل کے حل پرتوجہ دینی چاہیے۔

اس حصے سے مزید

سیاسی معاملات میں فوج کی مدد حاصل نہیں کریں گے، عمران خان

دوسری جانب پاک فوج نے بھی کہا ہے کہ وہ وجودہ سیاسی بحران کے پیچھے نہیں ہے۔

پی ٹی آئی اور پی اے ٹی قائدین کو بغاوت کے مقدمے کا سامنا

پی ٹی آئی اور پی اے ٹی کی قیادت کے خلاف بغاوت اور دہشتگردی سمیت مختلف دفعات کے تحت پانچ مقدمات درج کیے گئے ہیں۔

'مظاہرین جانتے تھے کہ وہ پی ٹی وی میں کیا کررہے ہیں'

یہ لوگ حیرت انگیز طور پر پی ٹی وی کے اہم دفاتر، مرکزی نیوز روم اور نیوز اسٹوڈیوز کے مقامات سے واقف تھے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔