18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

عمران خان ایک بار پھر چوہدری نثار کی تنقید کا شکار

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نثارعلی خان جمعرات کے روز پریس کانفرنس کے دوران۔ – آئی این پی فوٹو

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نثار نے ایک بار پھر تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کو ٹیکس چور قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے اپنے اثاثے چھپائے ہیں۔ اوران پر لگائے گئے الزامات غلط ہیں تو عدالتوں میں لے جائیں۔

جمعرات کے روز بھی تحریک انصاف اور ملسم لیگ ن کا ایک دوسرے کے خلاف دھواں دھار الزامات لگانے کا سلسلسہ جاری رہا۔

ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ عمران خان صرف ن لیگ اور میاں نواز شریف پر الزامات لگاتے ہیں اور اب وہ یہ الزام تراشی کی سیاست بند کردیں۔

گزشتہ روز تحریک انصاف کے سربراہ عمران  خان  نے کہا تھا کہ شوکت خانم کے خلاف لگائے گئے الزامات پر وہ عدالت سے رجوع کریں گے۔

اس سے قبل قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نے نثار نے عمران خان اور رحمان ملک کے ایجنڈے کو ایک قرار دیا تھا۔ انکا کہنا تھا کہ عمران خان بہادر بنتے ہیں لیکن میدان کے آدمی نہیں ہیں، چیلنج کرکے بھاگ گئے۔

چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ عمران خان کو آصف زرداری پر لگے الزامات نظر کیوں نہیں آتے، شوکت خانم کے پیچھے چھپنے سے بھی کچھ نہ ہوگا۔

مسلم لیگ ن کے رہنماء کا مزید کہنا تھا کہ غصےسےکوئی بڑا لیڈر نہیں بن جاتا، اور تمام سیاسی جماعتوں کومسائل کے حل پرتوجہ دینی چاہیے۔

اس حصے سے مزید

پی ٹی آئی کا اپنی احتجاجی تحریک ملک بھر تک پھیلانے کا فیصلہ

کور کمیٹی کے اجلاس میں یہ متفقہ فیصلہ کیا گیا کہ عمران خان اکیس ستمبر کو کراچی جائیں گے اور پارٹی ورکرز سے خطاب کریں گے۔

مصالحتی جرگے کی پانچ روزہ ’جنگ بندی‘ کی تجویز

سینیٹر رحمان ملک نے اراکین پارلیمنٹ کو بتایا کہ مذاکراتی جرگہ ایک قابل عمل فارمولے کے قریب پہنچ گیا ہے۔

سپریم کورٹ نے مختاراں مائی کیس کے ثبوت طلب کرلیے

نظرثانی کی درخواست کی سماعت کے دوران عدالتی بینچ کو مطلع کیا گیا کہ ثبوت عدالتی ریکارڈز میں موجود نہیں ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔