20 اگست, 2014 | 23 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

سی این این، ٹائم میگزین کے فرید زکریا معطل

فرید زکریا۔ رائٹرز فوٹو

نیویارک: سی این این کے میزبان اور ٹائم میگزین کے ایڈیٹر-ایٹ-لارج فرید زکریا کو سرقے کے الزام میں معطل کردیا گیا ہے۔

این ڈی ٹی وی کے مطابق فرید زکریا پر الزام ہے کہ انہوں نے ٹائم میگزین میں چھپنے والے اپنے کالم میں کسی دوسرے مصنف کے مضمون کے کچھ حصے استعمال کیے تھے۔

ان کا یہ کالم ٹائم میگزین کے بیس آگست کے شمارے میں چھپا تھا جس میں انہوں نے جل لیپور کے دی نیو یارکر میں تئیس اپریل کو چھپنے والے ایک مضمون کے کچھ حصے 'چرائے' تھے۔

البتہ فرید زکریا نے جمعے کے روز اپنی غلطی تسلیم کرتے ہوئے معافی مانگ لی ہے۔ انھوں نے اعتراف کیا ہے کہ ان سے بہت بڑی غلطی ہوئی ہے۔

ٹائم میگزین کے ترجمان کا کہنا ہے کہ میگزین نے ان کی معافی قبول کرلی ہے لیکن ان کے کالم کو ایک مہینے کے لیئے معطل کردیا جائے گا۔

دوسری طرف سی این این نے بھی فرید زکریا کے پروگرام کو غیر معینہ مدت کے لیئے معطل کردیا۔

اب سی این این پر فرید زکریا کے پروگرام 'جی پی ایس' کی جگہ کوئی اور پروگرام دیکھایا جائے گا۔

اس حصے سے مزید

راشد منہاس کا 43 واں یوم شہادت

ان کی بے مثال قربانی پر حکومت پاکستان کی جانب سے انھیں اعلیٰ ترین فوجی اعزاز نشانِ حیدر سے نوازا گیا۔

دختر' کا ٹورنٹو فلم فیسٹیول میں پریمیئر'

جس میں دنیا بھر سے پہلی یا دوسری مرتبہ فلمیں بنانے والے ڈائریکٹرز کو منتخب کیا جاتا ہے۔

سنگھم ریٹرنز بھی سو کروڑ کی دوڑ میں شامل

فلم نے سلمان کی 'کِک' کی طرح چار دنوں میں سو کروڑ کما کر بولی وڈ کی کامیاب ترین فلم کا اعزاز حاصل کرلیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

نمبروں کی غلط فہمی

یہ ایک افسوسناک بات ہے کہ سوئس بینک میں رقم کے بارے میں ایک بالکل بے تکا اندازہ اتنے عرصے سے خبروں میں گردش کررہا ہے۔

اگر مگر سے کام نہ لیں

مسلم لیگ ن کے پاس کھونے کے لیے سب سے زیادہ چیزیں ہیں، اس لیے امید ہے کہ دانشمندی سے کام لیا جائے گا۔

بلاگ

ڈرامہ سیریل : 'پیارے افضل ' اچھوتی کہانی، بہترین پرفارمنس

چند ماہ سے ملک بھر میں دیکھے اور پسند کیے جانے والے ڈرامہ کو رواں سال کا اب تک کا بہترین کھیل قرار دیا گیا ہے-

انقلاب کو میرے لان سے ہٹاؤ

اسلام آباد کے رہائشی اس بات کو قبول نہیں کریں گے، کہ انقلابی ان کے لان میں ڈیرے ڈال کر بیٹھ جائیں۔

انقلاب کا ترپ پتّہ

اگر اسمبلی یا وزیراعظم ہاؤس میں چند ہزار کارکن گھسا کر ہی حکومت میں آنا ہے تو پھر ملک میں انتخابات کروانے کا کیا فائدہ

تماشا، تماشائی اور مداری

ہم مڈل کلاس لوگ بھی عجیب ہیں، بڑے ہی نہیں ہوتے، ہوبھی جایئں تو کھلونوں سے بہل جاتے ہیں۔ یونہی تماشا دیکھتے رہتے ہیں۔