02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

ہندوستان ڈیموں کی تعمیر روکے، فضل الرحمان

مولانا فضل الرحمان ۔ فائل فوٹو

جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ اور کشمیر کمیٹی کے چئیرمین مولانا فضل الرحمان نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ہندوستان کے مقبوضہ کشمیر میں دریاؤں پر مزید ڈیم تعمیر کرنا سے پاکستان پر تباہ کن اثرات مرتب ہوں گے۔

پیر کے روزمولانا فضل الرحمان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر سے آنے والے دریاؤں کا پانی روکنے کی وجہ سے پاکستان میں پانی کی کمی کا مسئلہ پیدا ہورہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہندوستان کو پاکستان کے دریاؤں کا پانی نہیں روکنا چاہئے۔

جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ نے کہا کہ سندھ طاس معاہدے کے مطابق چناب، جہلم اور دریائے سندھ کا پانی پاکستان کیلئے مختص ہےلیکن ہندوستان نے ان دریاؤں پر کئی ڈیم تعمیر کرلیے ہیں اور انکا فائدہ غریب کشمیریوں کو نہیں ہورہا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستانی رہنماؤں کی جانب سے دوستی سے متعلق بیانات روز آتے ہیں لیکن ہندوستان پاکستان کو نقصان پہنچانے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے دیتا۔

اس حصے سے مزید

ہاشمی کے الزامات بے بنیاد ہیں، پی ٹی آئی

تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی نے فوج کے ساتھ کوئی رابطہ نہیں کیا ہے اور نہ ہی کوئی خفیہ ایجنڈا ہے

کسی کے کندھوں پر چڑھ کر اقتدار میں نہیں آئیں گے، عمران خان

حکومت استعفے کے علاوہ سب کچھ ماننے کے لیے تیار ہوگئی مگر نواز شریف کے استعفے کے بغیر کسی صورت واپس نہیں جاﺅں گا۔

'خان صاحب نے کہا کہ فوج کے بغیر نہیں چل سکتے'

عمران کو ملک کے آئین اور قانون کی پرواہ نہیں، وہ منصوبہ بندی کے تحت اسلام آباد آئے ہیں، صدر تحریک انصاف جاوید ہاشمی


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔