23 ستمبر, 2014 | 27 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

مشرف، شوکت عزیز، شیرپاؤ کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری

نواب اکبر بگٹی کو دو ہزار چھ میں ایک فوجی آپریشن میں ہلاک کردیا گیا تھا۔ - فوٹو فائل

سبی: بلوچستان کی ایک عدالت نے نواب اکبر بگٹی قتل کیس میں سابق صدر پرویز مشرف سمیت سات ملزمان کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے ہیں۔

مشرف کے علاوہ جن شخصیات کے وارنٹ جاری ہوئے ہیں ان میں سابق وزیراعظم شوکت عزیز، سابق وفاقی وزیرداخلہ آفتاب شیرپاؤ اور سابق وزیراعلٰی بلوچستان جام محمد یوسف بھی شامل ہیں۔

آج بدھ کے روزسبی میں انسداد دہشت گردی کی ایک عدالت میں بلوچ رہنما نواب اکبر بگٹی قتل کیس کی تفصیلی سماعت ہوئی۔

واضح رہے کہ عدالت اکبر بگٹی کے صاحبزادے جمیل اکبربگٹی کی درخواست پر اس کیس کی سماعت کررہی ہے۔

نواب اکبر بگٹی کو چھبیس اگست دو ہزار چھ میں ایک فوجی آپریشن کے دوران مار دیا گیا تھا۔

بعدازاں، ان کے بڑے صاحبزادے نے ایک ایف آئی آر درج کرائی جس میں سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف، سابق وزیر اعظم شوکت عزیز، اس وقت کے گورنر بلوچستان اویس غنی، وزیر خارجہ آفتاب شیر پاؤ، وزیر اعلیٰ بلوچستان جام محمد یوسف اور صوبائی وزیر داخلہ شعیب نوشیروانی کو ملزم نامزد کیا گیا تھا۔

گذشتہ مہینےعدالت نے ایف آئی آر میں نامزد تمام افراد کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے اور مزید سماعت کیلیے پندرہ اگست کی تاریخ مقرر کی تھی۔

اس حصے سے مزید

تربت: دو مسلح گروپوں میں تصادم سے 11 ہلاکتیں

مسلح افراد نے یعقوب بالگتری اور ان کے ساتھیوں پر اُس وقت فائرنگ کی جب وہ اپنے داماد کے گھر میں دعوت پر موجود تھے۔

بی این پی کی نئے صوبوں کے مطالبے کی مخالفت

بلوچستان نیشنل پارٹی کا کہنا ہے کہ اگر بلوچستان کو تقسیم کرنے کی کوشش کی گئی تو اس کی مزاحمت کی جائے گی۔

خضدار سے تین تشدد زدہ لاشیں برآمد

مقامی پولیس کے مطابق تینوں افراد کو انتہائی قریب سے گولی مار کر صحرائی علاقے میں پھینک دیا گیا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

سوشلزم کیوں؟

اگر ہم مسلسل بحث کرسکتے ہیں کہ جمہوریت کیوں نہیں، شریعت کیوں نہیں، تو اس سوال پر بھی بحث ضروری ہے کہ سوشلزم کیوں نہیں؟

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

بلاگ

مووی ریویو: 'خوبصورت' - فواد اور سونم کی خوبصورت کہانی

اپنے پُر مزاح کرداروں کے باوجود فلم شوخ اور رومانٹک ڈرامہ ہے، جسے آپ باآسانی ڈزنی کی طلسماتی کہانی کہہ سکتے ہیں-

کراچی میں بجلی کا مسئلہ اور نیپرا کا منفی کردار

اپنی نااہلی کی وجہ سے نیپرا نے بیرونی سرمایہ کاروں کو مشکل میں ڈال رکھا ہے، جن میں سے کچھ تو کام شروع کرنے کو تیار ہیں۔

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔