17 ستمبر, 2014 | 21 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستان کے جوہری ہتھیار محفوظ ہیں: امریکہ

یو ایس اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی ترجمان وکٹوریہ نیولینڈ۔ – روئٹرز فائل فوٹو

واشنگٹن: امریکہ نے کامرہ بیس حملے میں جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نےایٹمی ہتھیاروں کی حفاظت کےبہترانتظامات کررکھےہیں اور وہ ان سے مطمئن ہیں۔

یو ایس اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی ترجمان وکٹوریہ نیولینڈ  نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کامرہ بیس پر حملے سے پاکستان کے جوہری ہتھیاروں کو کوئی خطرہ نہیں اور انہیں پاکستان کے اس بیان پر کوئی شک نہیں ہے کہ کامرہ بیس میں جوہری ہتھیار موجود نہیں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ خطے میں امن کیلئے پاک افغان اور نیٹو تعاون ضروری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جوہری ہتھیاروں کے تحفظ کیلئے پاکستان کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں اور پاکستانی حکومت نے ایٹیم ہتھیاروں کی تحفظ کیلئے بہترین اقدامات کررکھے ہیں۔

اس حصے سے مزید

آئی ایس پر توجہ سے جنوبی ایشیا میں لڑائی متاثر نہیں ہوگی: امریکا

اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی ترجمان نے اس خیال سے اتفاق نہیں کیا کہ آئی امریکا جنوبی ایشیا کی لڑئی کو نظرانداز کررہا ہے۔

ساٹھ فیصد امریکی داعش کے خلاف کارروائی کے حامی

حالیہ پول کے نتائج کے مطابق امریکی اب اسلامک اسٹیٹ عرف آئی ایس کی جانب سے خوف میں مبتلا ہو گئے ہیں۔

ایران کے ساتھ بیک چینل مذاکرات کا راستہ کھلا ہے: امریکا

امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی ترجمان میری ہاف نے کہا کہ بشارالاسد کی حکومت کے ساتھ بیک چینل مذاکرت کا کوئی جواز موجود نہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔