02 اکتوبر, 2014 | 6 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

کامرہ حملے کا زخمی سیکورٹی اہلکار ہلاک

کامرہ: پاکستانی فوجی منہاس ائیر بیس پر پہرہ دے رہے ہیں۔ - رائٹرز

اٹک: کامرہ میں پاکستان فضائیہ کی منہاس ائیر بیس پر دہشت گردوں کے حملے میں زخمی ہونے والا ایک اور اہلکار دم توڑ گیا۔

پاکستان ائیر فورس کے ترجمان طارق محمود کے مطابق محمد اقبال کامرہ کمپلیکس کے اسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہوا۔

اس طرح بدھ اور جمعرات کی درمیان رات کو ہونے والے حملے میں ہلاک ہونے والے سیکورٹی اہلکاروں کی تعداد دو ہو گئی ہے۔

گذشتہ روز ہلاک والے سپاہی محمد آصف کو فوجی اعزاز کےساتھ ملتان میں سپردخاک کردیا گیا۔

دوسری جانب، حملے کی تحقیقات کاعمل جاری ہے اور ائیربیس سکیورٹی کے فلائٹ لیفٹیننٹ آفیسر کی مدعیت میں اٹک کے تھانہ صدر میں دو ایف آئی آر درج کرا دی گئی ہیں۔

ایف آئی آر میں حملے کے دوران مارے گئے نودہشت گردوں کوملزم نامزد کیا گیا ہے جبکہ حملہ آوروں کی شناخت کے لیے نادرا کی ٹیم نے کامرہ کا دورہ کرکے ان کی انگلیوں کے نشانات حاصل کیے ہیں۔۔

اس حصے سے مزید

جاویدہاشمی تحریک انصاف سے مستعفی،الیکشن میں مسلم لیگی حمایت حاصل

حکومتی جماعت کے وفد سے ملاقات کے بعد ان کا کہنا تھا کہ ایسی پارٹی کا کارکن نہیں رہنا چاہتا جو جمہوریت کے خلاف سازش کرے۔

امید ہے عید سے قبل دھرنے ختم ہوجائیں گے، رحمان ملک

سابق وزیرِ داخلہ کا کہنا تھا کہ فریقین کو لچک کا مظاہرہ کرنا ہوگا، سیاست میں مذاکرات کا راستہ بند نہیں ہوتا۔

کھاریاں: فوج کانیشنل کاؤنٹر ٹیررزم سینٹر قائم

انسداددہشت گردی مرکزمیںٰ فوجی دستوں،پولیس، کانسٹیبلری،لیویزسمیت غیرملکی فورسزکو دہشت گردی سے نمٹنے کی تربیت دی جائے گی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟