01 ستمبر, 2014 | 5 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستانی پالیمینٹیرینزمذاکرات کیلیے ہندوستان روانہ

۔—فائل فوٹو

لاہور: ویزا پالیسی اور تجارت سمیت مختلف امور پر بات چیت کیلیے پاکستانی پالیمینٹیرینز پر مشتمل آٹھ رکنی وفد بدھ کے روز واہگہ کے راستے ہندوستان روانہ ہو گیا۔

حکمراں جماعت پاکستان پیپلزپارٹی کے سیکرٹری جنرل اور سینیٹر جہانگیر بدر وفد کی قیادت کر رہے ہیں جبکہ دیگر ارکان میں ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی فیصل کریم کنڈی، خرم دستگیر، حاجی عدیل، نفیسہ شاہ، ندیم افضل چن، صابر بلوچ اور شازیہ مری شامل ہیں ۔

اس چار روزہ دورے میں وفد ہندوستانی پارلیمنٹیرینز کے ساتھ ملاقاتیں کرے گا۔

پاکستانی وفد نے سرحد عبور کرنے سے پہلے میڈیا سے بات چیت میں امید ظاہر کی کہ ویزا پالیسی میں نرمی کے حوالے سے مثبت پیشرفت ہو گی ۔

جہانگیربدر نے کہا کہ جنوبی ایشیا میں تجارتی سرگرمیوں کے فروغ اور قیامِ امن کے لیے کوشش کررہے ہیں۔

انہوں نے خواہش ظاہر کی کہ یورو زون کی طرز پر ساؤتھ ایشیا زون بھی بننا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ وفد میں چاروں صوبوں اور پارلیمنٹ میں موجود سیاسی جماعتوں کی نمائندگی شامل ہے۔

اس موقع پرحاجی عدیل نے کہا ہمسایہ ملک کے ساتھ تجارت کےعلاوہ تعلیم اور صحت کے شعبوں میں بھی تعاون بڑھانا چاہتے ہیں۔

خرم دستگیر کا کہنا تھا کہ وہ ہندوستان خیرسگالی کا پیغام لے کر جارہے ہیں۔

اس حصے سے مزید

عمران، قادری کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج

دونوں رہنماؤں کے خلاف ایس ایچ او محبوب احمد کی مدعیت میں سیکریٹریٹ پولیس تھانےمیں ایف آئی آر نمبر 182 31/8 درج کی گئی۔

وزیر اعظم اور آرمی چیف کی ملاقات ختم

وزیر اعظم نواز شریف اور آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے درمیان آج ہونے والی ملاقات ختم ہو گئی ہے۔

شاہراہِ دستور پر صحافت ایک جرم ہے

میڈیا کے نمائندے جو کچھ منظر میں ہوتا ہے، وہی ناظرین کو دکھاتے ہیں، لیکن شاہراہِ دستور پر ان کا یہ فرض جرم بن گیا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔