01 اگست, 2014 | 4 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

اجمل قصاب کی سزائے موت برقرار

اجمل قصاب۔ — فائل فوٹو

ہندوستان کی سپریم کورٹ نے بدھ کے روز اپنے ایک فیصلے میں ممبئی حملوں کے مجرم اجمل قصاب کی سزائے موت کو برقرار رکھا ہے۔

دو ججوں پر مشتمل بنچ نے اپنے فیصلے میں کہا کہ ان کے پاس سزائے موت دینے کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے۔

 فیصلے کے مطابق، قصاب کا سب سے بڑا جرم ہندوستانی حکومت کے خلاف جنگ کرنا تھا۔

چھبیس نومبر، 2008 میں اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ممبئی کے مختلف مقامات پرحملہ کرنے والے قصاب کو ممبئی کی ایک عدالت نے موت کی سزا سنائی تھی۔ بعد ازاں، گزشتہ فروری میں ممبئی ہائی کورٹ نے فیصلے کی توثیق کی تھی۔

قصاب نے ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کر رکھا تھا جس پر آج فیصلہ سنا دیا گیا ہے۔

سزا کے خلاف اپیل مسترد ہونے کے بعد قصاب اب صدر مملکت کے سامنے رحم کی اپیل دائر کر سکتے ہیں۔

اس حصے سے مزید

انڈیا: لینڈ سلائیڈنگ کے باعث دس افراد ہلاک

شدید بارشوں کی وجہ سے مٹی کے تودے گرنے کے نتیجے میں تقریباً 150 افراد ملبے تلے دب گئے ہیں۔

ائیر انڈیا کا عملہ سونے کی سمگلنگ میں ملوث

گزشتہ تین سالوں میں ائیر انڈیا عملے کے سمگلنگ میں ملوث ہونے کے تیرہ کیس سامنے آئے، سول ایوی ایشن وزیر۔

ہندوستان: متنازع زمین پر مسلم سکھ فسادات، تین افراد ہلاک

ہندوستانی ریاست اترپردیش کے لع سہارنپور میں سکھ مسلم فساد میں کم ازکم تین افراد ہلاک اور 18 سے زائد زخمی ہو گئے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

بجٹ اور صحت کا شعبہ

ایسا لگتا ہے کہ صحت کے بجٹ کی بڑھتی ہوئی ضروریات کیلئے عطیات دینے والے ملکوں کے پیسے پر زیادہ انحصار کیا جاتا ہے

جنگ اور ہوائی سفر

پرواز کرنے کا معجزہ، جو انسانی ذہانت کا خوشگوار مظہر ہے، انسان کے انتقامی جذبات اور خون کی پیاس کی نذر ہوگیا ہے

بلاگ

ساغر صدیقی : ایک دل شکستہ شاعر

وہ خوبصورت نظمیں لکھتے، پھر بلند آواز میں خالی نگاہوں سے پڑھتے، پھر ان کاغذات کو پھاڑ دیتے جن پر وہ نظمیں لکھی ہوتیں

پکوان کہانی: کابلی پلاؤ - شمال کی شان

گوشت میں پکے چاول اس خطے کے جنگجوؤں کی ذہنی مطابقت اور جسمانی ساخت کے لیے موزوں تھے۔

ایک پاکستانی صحافی کی امریکا یاترا

میں نے جب یہ پوچھا کے کیا وہ پاکستان جانا چاہے گا تو اس کا کہنا تھا کے ہاں مجھے پاکستان جانے کا بہت شوق ہے۔

مووی ریویو: 'کک' صرف سلمان خان کی فلم نہیں

باصلاحیت اداکاروں کے ساتھ فلم بنا کر ساجد ناڈیا والا نے خود کو ایک قابل ڈائریکٹر منوا لیا ہے۔