18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

رمشا کے جوڈيشل ريمانڈ ميں توسيع

پولیس کی تفتیش مکمل نہ ہونے کی وجہ سے عدالت نے رمشا کے ريمانڈ ميں مزيد چودہ دن کی توسيع کردی۔ اے پی فوٹو

اسلام آباد: اسلام آباد کی ایک عدالت نے توہین مذہب کیس میں گرفتار عیسائی لڑکی رمشا کے عدالتی ريمانڈ ميں چودہ دن کی توسيع کردی ہے۔

 رمشا پر الزام ہے کہ اس نے قرآنی آیات پر مشتمل اوراق کو نذر آتش کیا تھا۔

 جمعہ کے روز رمشا کو جوڈيشل مجسٹريٹ اسلام آباد انعام اللہ خان کی عدالت ميں پيش کيا گيا۔

پولیس نے عدالت کے استفسار پر بتایا کہ تفتيش مکمل نہيں ہو سکی لہذا چالان کیلئے مہلت دی جائے جس پر ملزمہ کے ريمانڈ ميں مزيد چودہ دن کی توسيع کردی گئی۔

 اس موقع پر عدالت نے پوليس کو ہدايت کی کہ کيس کی تفتيش جلد از جلد مکمل کرکے چالان پيش کيا جائے۔

 واضع رہے کہ دو روز قبل قومی اسمبلی کی قائمہ کميٹی برائے انسانی حقوق نے ذہنی مرض میں مبتلا رمشا کے علاج کی ہدایات جاری کی تھیں۔

 کميٹی نے وزارت انسانی حقوق کو بچی کے گھر جا کر حقائق جمع کرنے اور عيسائی برادری کو مکمل تحفظ فراہم کرنے کا بھی حکم ديا تھا۔

اس حصے سے مزید

'دھرنوں سے ریاست کو نقصان پہنچ رہا ہے'

وفاقی وزیر برائے ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ دھرنوں کی وجہ سے چین کے صدر نے پاکستان کا دورہ ملتوی کیا۔

پی ٹی آئی کا اپنی احتجاجی تحریک ملک بھر تک پھیلانے کا فیصلہ

کور کمیٹی کے اجلاس میں یہ متفقہ فیصلہ کیا گیا کہ عمران خان اکیس ستمبر کو کراچی جائیں گے اور پارٹی ورکرز سے خطاب کریں گے۔

مصالحتی جرگے کی پانچ روزہ ’جنگ بندی‘ کی تجویز

سینیٹر رحمان ملک نے اراکین پارلیمنٹ کو بتایا کہ مذاکراتی جرگہ ایک قابل عمل فارمولے کے قریب پہنچ گیا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔