25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

شیعوں کے قتل عام پہ الطاف حسین کی تشویش

ایم کیوٓایم کے قائد الطاف حسین کا کہنا تھا کہ آزاد عدلیہ کا یہ مطلب نہیں کہ قاتلوں کو عدم ثبوت پر بری کر دیا جائے۔۔ فائل فوٹو

کراچی: ملک میں امن و امان کی بگڑتی صورتحال پر متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے انتہائی تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ شعیہ اور سنی علماء ایک دوسرے سے ہاتھ ملائیں کیونکہ یہ باتوں کا نہیں عمل کا وقت ہے۔

انکا کہنا تھا کہ آزاد عدلیہ کا یہ مطلب نہیں کہ قاتلوں کو عدم ثبوت پر بری کر دیا جائے۔

ہفتہ کہ روزکراچی میں اتحاد بین المسلمین کانفرنس سے خطاب میں الطاف حسین نے مذہبی ہم آہنگی اور رواداری کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ یہ منافقت سے کام لینے کا وقت نہیں ہے۔

الطاف حسین نے علمائے کرام کو ملکی حالت پر دعوت فکر دیتے ہوئے کہا کہ اپنی ذمہ داریاں دوسروں کےکاندھوں پرنہیں ڈالی جاسکتیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں بےگناہ افراد قتل ہو رہے ہیں جبکہ حساس ادارے اور حکومت کہیں دکھائی نہیں دیتے۔

عدالتی نظام پہ تنقید کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے قائد کا کہنا تھا کہ آزاد عدلیہ کا مطلب یہ نہیں کہ مجرم عدم ثبوت کے بنا پر بری کردیے جائیں۔

کانفرنس میں شریک علما کرام نے کہا کہ وہ فرقہ واریت کی بھینٹ چڑھ جانے والوں کے گھر جائیں گے۔ جبکہ الطاف حسین کی تجویز پر مختلف مکاتب فکر کے علمائے کرام  پر مشتمل چودہ رکنی فورم بھی تشکیل دیا گیا۔ یہ فورم متحدہ اتحاد بین المسلمین کے نام سے کام کرے گا۔

اس حصے سے مزید

لاہور: تین سالہ بچی کے ساتھ ریپ کا انسانیت سوز واقعہ

نامعلوم افراد بچی کو ریپ کا نشانہ بنا کر اُسے گرین بیلٹ کے قریب پھینک کر فرار ہو گئے۔ بچی کی حالت تشویشناک ہے۔

پشاور: سڑک کنارے نصب دھماکا، دو افراد ہلاک

دوسری جانب جنداللہ بازار کے علاقے میں ایک ایف سی اہلکار کو نامعلوم مسلح افراد نے گولی مار کر ہلاک کردیا۔

ہندوستان کے ساتھ تمام مسائل پر بات چیت ہوگی: دفترخارجہ

سیکریٹری خارجہ اعزاز چوہدری نے کہا ہے کہ وہ ہندوستانی سیکریٹری خارجہ کے ساتھ ملاقات میں تمام اہم مسائل پر بات کریں گے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بلاگ

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔