17 ستمبر, 2014 | 21 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان میں ٹارگٹ کلنگ کی فہرست طلب

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فوٹو آن لائن

کوئٹہ: چیف جسٹس افتخارمحمد چوہدری نے بلوچستان میں گزشتہ چھ ماہ کے دوران ٹارگٹ کلنگ کا شکار بننے والوں کی فہرست طلب کرلی ہے۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے پیر کے روز بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے آئی جی پولیس سے استفسار کیا کہ کوئٹہ سمیت بلوچستان میں لوگ مارے جارہے ہیں اور ایسے حالات میں پولیس کہاں ہے۔

انہوں نے مزید کہا: پولیس احکامات کی خلاف ورزی کر رہی ہے اور صورتحال یہ ہے کہ ایک سیشن جج کو اس کے محافظ سمیت قتل کردیا گیا۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ اس وقت پولیس کہاں تھی گزشتہ روز کوئٹہ میں سات لوگوں کو ماردیا گیا اور بولان میں شناخت کے بعد لوگ قتل کردیئے گئے۔

اس موقع پرانہوں نےآئی جی پولیس کو حکم دیا کہ چھ ماہ کے دوران ٹارگٹ کلنگ کا شکار بننے والوں کی لسٹ بنا کر پیش کریں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ بلوچستان میں اسمگلنگ کی گاڑیاں چل رہی ہیں اور لوگ سرعام اسلحہ لیکر چلتے ہیں۔

اس حصے سے مزید

جعلی ڈگری پر مولوی آغا محمد کی اسمبلی رکنیت ختم

بلوچستان الیکشن ٹریبیونل نے مولوی آغا محمد کی ڈگری کی تصدیق نہ ہونے پر نااہل قرار دے کر دوبارہ انتخابات کا حکم دیاتھا۔

نصیر آباد: دو گروپس میں تصادم، چار افراد ہلاک

حکام کا کہنا ہے کہ پانی کے تنازع پر دو مسلح گروپس میں فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس میں چھ افراد زخمی بھی ہوئے۔

چمن میں نیٹو کنٹینر پر فائرنگ، دو افراد زخمی

پاک افغان سرحد پر چمن کے علاقے میں نامعلوم ملزمان نے نیٹو کنٹینر پر فائرنگ کرد، ڈرائیور سمیت دو افراد زخمی ہو گئے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ڈیم، کینال، بیراج، اور ماحول

ہندوستانی پنجاب میں زیادہ بارشیں ہوئیں، جسکی وجہ سے اپ سٹریم کا پانی پاکستانی چناب اور جہلم میں بہہ آیا ہے

انتخابی اصلاحات: اگلا قدم

بحیثیت قوم ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہوگا، کہ اس معاملے میں سچ سب کے سامنے آئے، اور کوئی شک شبہہ باقی نا رہے۔

بلاگ

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔

جب خاموشی بہتر سمجھی جائے

اس بات کو تسلیم کرنا ہو گا کہ برطانوی پاکستانیوں کے پاس جنسی استحصال پر بات کرنے کے لیے آزادی نہیں ہے۔

نائنٹیز کا پاکستان - 6

اندازے کے مطابق اس دور میں پاکستانی فوج ہر ماہ اوسط ساڑھے سات کروڑ ڈالر ’مجاہدین‘ پر خرچ کر رہی تھی۔