19 ستمبر, 2014 | 23 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

'بلوچستان میں 426 افراد کی لاشیں ملیں'

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فوٹو آن لائن

اسلام آباد: بلوچستان حکومت نے صوبے میں جاری ٹارگٹ کلنگ کے حوالے سے ایک رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کردی ہے۔

 منگل کے روز چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کر رہا ہے۔

 چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں جاری سماعت کے دوران کہا کہ بلوچستان میں چار سو چھبیس افراد کی لاشیں ملی ہیں۔

 ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ چھ ماہ کے دوران چھیالیس شیعہ مسلمان ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنے جبکہ بیس سنی علماء بھی قتل کیے گیے۔

 انہوں نے نواب اکبربگٹی کے قتل کو پاکستان کی تاریخ میں سب سے بڑی غلطی قرار دیا۔

 چیف جسٹس نے بلوچستان میں تبادلے منسوخ کروانے والے افسران کو ہر صورت صوبے آنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایک ہفتے میں صوبائی حکومت کو رپورٹ کریں۔

 افتخار چوہدری کا کہنا تھا کہ گریڈ انیس پولیس افسران کو اس وقت تک گریڈ بیس میں ترقی نہیں دی جائے گی جب تک وہ کم از کم تین سال بلوچستان میں فرائض سر انجام نہیں دیتے۔

 ان کا کہنا تھا کہ ڈیرہ بگٹی کا مسئلہ حل ہونے تک بلوچستان میں امن و امان کا مسئلہ بر قرار رہے گا۔

 اس موقع پر اکبربگٹی کے بیٹے طلال بگٹی نے کہا کہ ایف سی کی موجودگی میں ڈیرہ بگٹی جانا خودکشی کے مترادف ہوگا۔

 چیف جسٹس نے اٹارنی جنرل کے پیش نہ ہونے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جب تک اٹارنی جنرل خود پیش نہیں ہوتے، وفاقی سیکرٹریز کو روزانہ بلائیں گے۔

 جسٹس افتخار نے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر تمام متعلقہ سیکرٹریز حاضر ہوں۔

اس حصے سے مزید

این اے 267 پر دوبارہ انتخابات کا حکم

آزاد میدوار نواب زادہ خالد مگسی کی کامیابی کو ان کے مدمقابل آزاد امیدوار میر عبدالرحیم نے چیلنج کیا تھا۔

'پی ٹی آئی اور پی اے ٹی کو بیرونی قوتوں کی حمایت حاصل ہے'

جمیعت علمائے اسلام-ف کے رہنما مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ یہ قوتیں ملک کے جوہری اثاثوں پر کنٹرول کرنا چاہتی ہیں۔

بلوچستان: کیچ میں دھماکے سے سیکیورٹی اہلکار قتل

بلوچستان کے ضلع کیچ میں بم دھماکے سے ایک سیکورٹی اہلکار ہلاک ہو گیا، گاڑی مکمل طور پر تباہ ہو گئی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

رودرہیم کا سبق

بچوں پر ہونیوالے جنسی تشدد پر ہماری شرمندگی کی سمت غلط ہے۔ شرم کی بات تو یہ ہے کہ ہم اس کو روکنے کی کوشش نہ کریں-

رکاوٹیں توڑ دو

اشرافیہ تعلیمی نظام کا بیڑہ غرق کرنے پر تلی ہوئی ہے جو خاص طور سے 1970ء کی دہائی کے بعد سے بد سے بدتر ہورہاہے۔

بلاگ

مووی ریویو: دختر -- دلوں کو چُھو لینے والی کہانی

اپنی تمام تر خوبیوں اور کچھ خامیوں کے ساتھ اس فلم کو پاکستانی نکتہ نگاہ سے پیش کیا گیا ہے۔

پھر وہی ڈیموں پر بحث

ڈیموں سے زراعت کے لیے پانی ملتا ہے، پانی پر کنٹرول سے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے اور توانائی بحران ختم کیا جاسکتا ہے۔

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔