26 جولائ, 2014 | 27 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

'بلوچستان میں 426 افراد کی لاشیں ملیں'

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فوٹو آن لائن

اسلام آباد: بلوچستان حکومت نے صوبے میں جاری ٹارگٹ کلنگ کے حوالے سے ایک رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کردی ہے۔

 منگل کے روز چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کر رہا ہے۔

 چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں جاری سماعت کے دوران کہا کہ بلوچستان میں چار سو چھبیس افراد کی لاشیں ملی ہیں۔

 ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ چھ ماہ کے دوران چھیالیس شیعہ مسلمان ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنے جبکہ بیس سنی علماء بھی قتل کیے گیے۔

 انہوں نے نواب اکبربگٹی کے قتل کو پاکستان کی تاریخ میں سب سے بڑی غلطی قرار دیا۔

 چیف جسٹس نے بلوچستان میں تبادلے منسوخ کروانے والے افسران کو ہر صورت صوبے آنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایک ہفتے میں صوبائی حکومت کو رپورٹ کریں۔

 افتخار چوہدری کا کہنا تھا کہ گریڈ انیس پولیس افسران کو اس وقت تک گریڈ بیس میں ترقی نہیں دی جائے گی جب تک وہ کم از کم تین سال بلوچستان میں فرائض سر انجام نہیں دیتے۔

 ان کا کہنا تھا کہ ڈیرہ بگٹی کا مسئلہ حل ہونے تک بلوچستان میں امن و امان کا مسئلہ بر قرار رہے گا۔

 اس موقع پر اکبربگٹی کے بیٹے طلال بگٹی نے کہا کہ ایف سی کی موجودگی میں ڈیرہ بگٹی جانا خودکشی کے مترادف ہوگا۔

 چیف جسٹس نے اٹارنی جنرل کے پیش نہ ہونے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جب تک اٹارنی جنرل خود پیش نہیں ہوتے، وفاقی سیکرٹریز کو روزانہ بلائیں گے۔

 جسٹس افتخار نے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر تمام متعلقہ سیکرٹریز حاضر ہوں۔

اس حصے سے مزید

کوئٹہ میں فائرنگ، دو پولیس اہلکار ہلاک

سریاب روڈ پر دو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کی۔

جھل مگسی میں' غیرت' کے نام پر لڑکی قتل

ضلع جھل مگسی کے آخند دانی گاؤں میں ایک باپ نے مبینہ طور پر'غیرت' کے نام پر اپنی بیٹی کو قتل کر دیا۔

بلوچستان: ڈھائی سال میں پہلا پولیو کیس

یونیسیف کے مطابق پولیو وائرس کا شکار 18 ماہ کی بچی کا خاندان رواں سال کراچی سے قلعہ عبداللہ منتقل ہوا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

جنگ اور ہوائی سفر

پرواز کرنے کا معجزہ، جو انسانی ذہانت کا خوشگوار مظہر ہے، انسان کے انتقامی جذبات اور خون کی پیاس کی نذر ہوگیا ہے

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

بلاگ

اخلاقیات: غیر مسلم پاکستانیوں کے لیے

اگر آج پاکستان میں غیر مسلم پاکستانیوں کا تناسب 5 فی صد بھی ہے تو 20 کروڑ کے ملک میں یہ ایک کروڑ پاکستانی بنتے ہیں۔

لکیر کے فقیر

دونوں صدارتی امیدواروں کے بیچ اقتدار کی جنگ نے افغانستان کو نسلی فسادات کی طرف دھکیل دیا ہے

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی