21 اگست, 2014 | 24 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

شدت پسند گروپ کے تعاون سے پولیو مہم کامیاب

تیرہ وادی میں تقریباً 32641 بچوں کو پولیو قطرے پلائے۔گئے، سرکاری ذرائع۔ — فائل تصویر اے پی

پشاور: حکومت نے ایک کالعدم شدت پسند گروپ کے تعاون سے چار سال میں پہلی بار تیرہ وادی کے دور دراز علاقوں میں بچوں کو پولیو وائرس سے بچاؤ کے لیے ویکسینیشن مہم میں کامیابی حاصل کی ہے۔

سرکاری ذرائع کے مطابق، خیبر ایجنسی کے گروپ حرکت الانصار کے تعاون سے باڑہ تحصیل کی تیرہ وادی کے پچانوے فیصد بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے گئے۔

ذرائع نے اسے ایک اہم پیش رفت قرار دیا کیوں کہ اس سے قبل طالبان کے زیر کنٹرول علاقوں میں پولیو ویکسینیشن کی متعدد کوششیں ناکام ثابت ہوئی تھیں۔

ذرائع نے ڈان کو بتایا کہ تقریباً 32641 بچوں کوپولیو  قطرے پلانے کا سہرا ویکیسینیشن ٹیم اور حرکت الانصار کو جاتا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ پیر اور منگل کو جاری رہنے والی اس مہم میں 11626 بچوں کو خسرہ جبکہ 3889 نومولود اور ایک ماہ سے کم عمر بچوں کو پانچ مختلف بیماریوں سے بچاؤ کی بھی ویکسینیشن دی گئی۔

حکام نے بتایا کہ گروپ نے علاقے میں مہم کی مخالفت ختم کرنے میں اہم کردارادا کیا۔

صرف چار خاندانوں نے بچوں  کو پولیو کے قطرے پلانے سے انکار کیا ہے، تاہم انہیں رضامند کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔

باڑہ میں جاری شدت پسندوں کے خلاف فوجی آپریشن کی وجہ سے اکتوبر 2009  سے اب تک پچاس فیصد بچے پولیو ویکسینیشن سے محروم رہے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں میں دور دراز مقامات پر بچوں تک رسائی کے لیے نئی حکمت عملی اپنائی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ گھر گھر مہم چلانے کے لیے اسکاؤٹس کی مدد حاصل کی گئی۔

اس حصے سے مزید

خیبرایجنسی: نیٹو ٹینکر پر فائرنگ، دو افراد ہلاک

فائرنگ کے بعد آئل ٹینکر میں آگ لگ گئی، جبکہ امدادی کارروائیاں شروع کردی گئیں ہیں۔

پشاور بڑی تباہی سے بچ گیا

دس کلو گرام وزنی بم کو چمکنی پولیس اسٹیشن کی حدود میں ایک پریشر ککر میں رکھا گیا تھا، جسے ناکارہ بنا دیا گیا۔

عمران خان پنجاب میں دھاندلی کی سزا کے پی کو نہ دیں: سراج الحق

جماعت اسلامی کے سربراہ کا کہنا ہے کہ آئین سے ماورا اقدام ملک میں جمہوریت کو نقصان پہنچائے گا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مضبوط ادارے

ریاستی اداروں پر تمام جماعتوں کی جانب سے حملہ تب کیا گیا جب وہ ابتدائی طور پر ہی سہی پر قابلیت کا مظاہرہ کرنے لگے تھے۔

آئینی نظام کو لاحق خطرات

پی ٹی آئی کی سیاست کے ساتھ مسئلہ یہ ہے کہ یہ کسی طرح موجودہ آئینی صورت حال میں ممکن سیاسی حل کیلئے تیار نہیں ہے-

بلاگ

جعلی انقلاب اور جعلی فوٹیجز

تحریک انصاف اور عوامی تحریک کی غیر آئینی حرکتوں کی وجہ سے اگر فوج آگئی تو چینلز ایسی نشریات کرنا بھول جائیں گے۔

!جس کی لاٹھی اُس کا گلّو

ہر دکاندار اور ریڑھی والے سے پِٹنا کوئی آسان عمل نہیں ہوگا شاید یہی وجہ ہے کہ سول نافرمانی کوئی آسان کام نہیں۔

ہمارے کپتانوں کے ساتھ مسئلہ کیا ہے؟

اس بات کا پتہ لگانا مشکل ہے کہ مصباح الحق اور عمران خان میں سے زیادہ کون بچوں کی طرح اپنی غلطی ماننے سے انکاری ہے۔

پاک سری لنکا ٹیسٹ سیریز – ایک جائزہ

امید کی جانی چاہئے کہ پاکستانی ٹیم ٹیسٹ سیریز میں اپنی شکست کا بدلہ ون ڈے سیریز میں لینے کی پوری کوشش کرے گی۔