23 جولائ, 2014 | 24 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

دو عہدوں کے خلاف کیس: سماعت چودہ ستمبر تک ملتوی

صدر آصف علی زرداری۔ — فائل فوٹو

لاہور: لاہورہائی کورٹ نے صدر آصف علی زرداری کے دو عہدے رکھنے کےخلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر صدر کے پرنسپل سیکرٹری کو دوبارہ نوٹس جاری کردیا ہے۔

بدھ کو چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ عمرعطابندیال کی سربراہی میں چار کنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔

وفاقی حکومت کی جانب سے وسیم سجاد جبکہ صدر پاکستان کی جانب سے کوئی وکیل پیش نہیں ہوا۔

سماعت کے دوران ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ اٹارنی جنرل سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں مصروفیت کے باعث پیش نہیں ہو سکے لہذا سماعت ملتوی کی جائے ۔

درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ صدر مملکت کو ان کے پرنسپل سیکرٹری کے ذریعے نوٹس موصول ہو چکے ہیں اور ان کے وکیل کا آج پیش نہ ہونا بھی توہین عدالت ہے ۔

عدالت نے قرار دیا کہ اگر صدر مملکت کو کیس کے فیصلے پر اعتراضات ہیں تو وہ انہیں اپنے وکیل کے ذریعے عدالت میں پیش کر سکتے ہیں ۔

بنچ نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ عدالتیں صدر کے عہدے کا احترام کرتی ہے تاہم قانون کی بالادستی سب سے اہم ہے ۔

عدالت نے کیس کی مزید سماعت چودہ ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے صدر مملکت کو ان کے پرنسپل سیکرٹری کے ذریعے دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کیا ہے۔

بنچ نے اٹارنی جنرل کو بھی کیس میں معاونت کے لیے طلب کر کیا ہے۔

وسیم سجاد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت قانون کے مطابق کیس کی پیروی کرے گی جبکہ درخواست گزار نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی توہین عدالت کیس کی طرح وفاقی حکومت کو ہائی کورٹ میں تاخیری حربے استعمال کرنے نہیں دیں گے۔

اس حصے سے مزید

این آر او کا علم صرف خاص لوگوں کو تھا، قریشی

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ اس وقت وزیر خارجہ ہونے کے باوجود وہ اس ڈیل سے بے خبر تھے۔

لاہور: لوڈشیڈنگ کے ستائے عوام سڑکوں پر نکل آئے

بدھ کو لاہورکے علاقے باٹا پوراورگردونواح میں مشتعل افراد نے لیسکو آفس پردھاوا بول دیا اورتوڑپھوڑ کی۔

مسلم لیگ (ن) کے رکن پنجاب اسمبلی خرم گلفام انتقال کر گئے

وزیراعلیٰ پنجاب نے خرم گلفام کے انتقال پر دلی رنج و غم کا اظہارکرتے ہوئے کہا ہے کہ انکی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائےگا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

کیا بڑا بہتر ہے؟

ہم اپنی جنوب ایشیائی شناخت سے پیچھا کیوں چھڑانا چاہتے ہیں جو تاریخی اعتبار سے عرب کے مقابلے میں کہیں زیادہ مالامال ہے؟

بلاگ

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-

مووی ریویو: پیزا - پلاٹ اچھا ہے

اگرچہ سکرین پلے کافی کمزور ہے مگر فلم کی کہانی میں آنے والے موڑ دیکھنے والوں کی دلچسپی برقرار رکھتے ہیں۔

جہادی برائے فروخت

اگر اب بھی سمجھ نہ آئی تو پاکستان کا حشر بھی عراق و شام سے مختلف نہیں ہوگا۔