02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

دو عہدوں کے خلاف کیس: سماعت چودہ ستمبر تک ملتوی

صدر آصف علی زرداری۔ — فائل فوٹو

لاہور: لاہورہائی کورٹ نے صدر آصف علی زرداری کے دو عہدے رکھنے کےخلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر صدر کے پرنسپل سیکرٹری کو دوبارہ نوٹس جاری کردیا ہے۔

بدھ کو چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ عمرعطابندیال کی سربراہی میں چار کنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔

وفاقی حکومت کی جانب سے وسیم سجاد جبکہ صدر پاکستان کی جانب سے کوئی وکیل پیش نہیں ہوا۔

سماعت کے دوران ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ اٹارنی جنرل سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں مصروفیت کے باعث پیش نہیں ہو سکے لہذا سماعت ملتوی کی جائے ۔

درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ صدر مملکت کو ان کے پرنسپل سیکرٹری کے ذریعے نوٹس موصول ہو چکے ہیں اور ان کے وکیل کا آج پیش نہ ہونا بھی توہین عدالت ہے ۔

عدالت نے قرار دیا کہ اگر صدر مملکت کو کیس کے فیصلے پر اعتراضات ہیں تو وہ انہیں اپنے وکیل کے ذریعے عدالت میں پیش کر سکتے ہیں ۔

بنچ نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ عدالتیں صدر کے عہدے کا احترام کرتی ہے تاہم قانون کی بالادستی سب سے اہم ہے ۔

عدالت نے کیس کی مزید سماعت چودہ ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے صدر مملکت کو ان کے پرنسپل سیکرٹری کے ذریعے دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کیا ہے۔

بنچ نے اٹارنی جنرل کو بھی کیس میں معاونت کے لیے طلب کر کیا ہے۔

وسیم سجاد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت قانون کے مطابق کیس کی پیروی کرے گی جبکہ درخواست گزار نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی توہین عدالت کیس کی طرح وفاقی حکومت کو ہائی کورٹ میں تاخیری حربے استعمال کرنے نہیں دیں گے۔

اس حصے سے مزید

نام نہاد لیڈر ملک کو میدانِ جنگ بنانا چاہتے ہیں، شہباز شریف

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ کچھ نام نہاد لیڈر آئین و قانون کی دھجیاں اڑاتے ہوئے ریاستی اداروں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

'حکومت اور مظاہرین کی ہٹ دھرمی سے جمہوریت کو نقصان ہوگا'

جماعت اسلامی کے جنرل سیکرٹری لیاقت بلوچ کا کہنا ہے کہ قوم کو سیاسی بحران پر تشویش ہے اور وہ مسئلے کا فوری حل چاہتی ہے۔

پی ٹی آئی اور پی اے ٹی 80 سےزائد کارکنان گرفتار

پنجاب کے مختلف شہروں میں اسلام آباد کے مظاہرین پر مبینہ تشدد کے خلاف ریلیاں نکالی گئیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔