18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

دو عہدوں کے خلاف کیس: سماعت چودہ ستمبر تک ملتوی

صدر آصف علی زرداری۔ — فائل فوٹو

لاہور: لاہورہائی کورٹ نے صدر آصف علی زرداری کے دو عہدے رکھنے کےخلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر صدر کے پرنسپل سیکرٹری کو دوبارہ نوٹس جاری کردیا ہے۔

بدھ کو چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ عمرعطابندیال کی سربراہی میں چار کنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔

وفاقی حکومت کی جانب سے وسیم سجاد جبکہ صدر پاکستان کی جانب سے کوئی وکیل پیش نہیں ہوا۔

سماعت کے دوران ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ اٹارنی جنرل سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں مصروفیت کے باعث پیش نہیں ہو سکے لہذا سماعت ملتوی کی جائے ۔

درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ صدر مملکت کو ان کے پرنسپل سیکرٹری کے ذریعے نوٹس موصول ہو چکے ہیں اور ان کے وکیل کا آج پیش نہ ہونا بھی توہین عدالت ہے ۔

عدالت نے قرار دیا کہ اگر صدر مملکت کو کیس کے فیصلے پر اعتراضات ہیں تو وہ انہیں اپنے وکیل کے ذریعے عدالت میں پیش کر سکتے ہیں ۔

بنچ نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ عدالتیں صدر کے عہدے کا احترام کرتی ہے تاہم قانون کی بالادستی سب سے اہم ہے ۔

عدالت نے کیس کی مزید سماعت چودہ ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے صدر مملکت کو ان کے پرنسپل سیکرٹری کے ذریعے دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کیا ہے۔

بنچ نے اٹارنی جنرل کو بھی کیس میں معاونت کے لیے طلب کر کیا ہے۔

وسیم سجاد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت قانون کے مطابق کیس کی پیروی کرے گی جبکہ درخواست گزار نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی توہین عدالت کیس کی طرح وفاقی حکومت کو ہائی کورٹ میں تاخیری حربے استعمال کرنے نہیں دیں گے۔

اس حصے سے مزید

سیلابی ریلا سندھ میں داخل

پنجاب میں مختلف پشتوں میں 193 شگافوں کے باعث سندھ میں داخل ہونے والے سیلابی ریلے کی شدت بہت کم رہ گئی تھی۔

سیلاب زدہ علاقوں میں وبائی امراض پھوٹنے کا خدشہ

سیلاب زدہ علاقوں میں سانس کے امراض کے روزانہ پانچ ہزار جبکہ گیسٹرو کے ڈھائی ہزار کیسز سامنے آرہے ہیں۔

چوری برطانیہ میں، مقدمہ پاکستان میں

لاہور پولیس نے مانچسٹر میں ایک چوری کا مقدمہ درج کرتے ہوئے ملزمہ کو گرفتار کر لیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔