24 اپريل, 2014 | 23 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

کابینہ کے اجلاس میں دہشتگردی کے خلاف دوبل منظور

وزیراعظم راجہ پرویز اشرف وفاقی کابینہ کے اجلاس کے دوران۔ اے پی پی فوٹو

اسلام آباد: حکومت 'فئیرٹرائل بل' کو پارلیمان میں پیش کرے گی۔ حکومت کا موقف ہے کہ اس بل کے ذریعے جدید ترین ٹیکنالوجی اور آلات کی مدد سے تحقیقات کرسکتے ہیں۔

آگر یہ بل منظور ہوجاتا ہے تو اس بل کے ذریعے لوگوں کی فون کالز ٹیپ ہوسکتیں ہیں اور اس کے علاوہ تمام ذاتی مواصلات بھی رسائی حاصل ہوگی تاکہ دہشت گردوں تک پہنچا جاسکے۔

فئیرٹرائل بل کے تحت ای میل ،ڈاک اوردیگرمواصلاتی موادبھی بطورشواہد استعمال ہونگے۔

ای میلز، ایس ایم ایس، فون کالز اور صوتی اور تصویری ریکارڈنگ بھی قابل قبول ثبوت قرار دیئے جائیں گے جبکہ مشتبہ افراد کو سیشن اور ڈسٹرکٹ کورٹ جج کی طرف سے وارنٹ جاری کے بعد چھ مہینے تک تحویل میں رکھا جائے گا۔

وفاقی کابینہ نے بدھ کے روز 'تحقیات کے لیئے فئیرٹرائل کے بل سن دو ہزار بارہ' کو منظور کیا جس کے بعد یہ بل اب پارلیمان میں پیش کیا جائے گا۔

اس بل کا ڈرافٹ کے مطابق جو کہ ڈان کو موصول ہوا ہے، آگر یہ بل منظور ہوجاتا ہے تو یہ لوگوں کی نجی زندگی میں بےجا مداخلت کا باعث بن سکتا ہے۔

اس بل کے ڈرافت کے مطابق پاکستانی شہری خواہ وہ کہیں پر بھی ہو، چاہے ہوائی جہاز پر ہو، بحری جہاز پر ہوں بشرط یہ کہ پاکستان میں رجسٹرڈ ہے۔

اس کے علاوہ وفاقی کابینہ نے 'انسداددہشت گردی بل سن دو ہزار بارہ' کی منظوری دیدی۔

بل کا مقصد دہشتگردوں کی مالی معاونت کی فراہمی کو روکنا ہے۔ بل کے تحت دہشتگردوں سے روابط رکھنے والوں کے خلاف بھی کارروائی کی جاسکے گی۔

قانون  کے تحت دہشتگردوں کی مالی معاونت کرنے والوں کے اثاثے اور جائیدادیں ضبط کی جاسکیں گی۔

بل کا اطلاق اندرون و بیرون ملک دونوں مالی معانت کرنے والوں پر ہوگا۔

خیال رہے کہ عالمی مالیاتی ٹاسک فورس نے پاکستان کو تنبیہ کی تھی کہ اگر دہشتگردوں کی مالی معاونت روکنے کے لئے قانون سازی نہ کی گئی تو اسے پابندیوں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

اس حصے سے مزید

پیمرا کا جیو کی انتظامیہ کو شو کاز نوٹس

پیمرا نے وزارتِ دفاع کی درخواست پر نوٹس جاری کرتے ہوئے جیو سے چھ مئی کو جواب طلب کرلیا۔

'مولانا عزیز کا نام مشتبہ دہشت گردوں میں شامل رکھا جائے'

اسلام آباد ہائی کورٹ کو بتایا گیا کہ مولانا عزیز کالعدم تنظیم سے وابستہ ہیں اور فوج کا حوصلہ پست کرنے کی کوشش کرچکے ہیں۔

مشرف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کی درخواست پر سماعت ملتوی

کل ہی نوٹس ملا ہے اسلئے کم ازکم 15 دن کا وقت دیا جائے، اٹارنی جنرل کی سندھ ہائی کورٹ سے درخواست۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

مقدّس ریپ

دو دن وہ اسی گاؤں میں ماں کے بازؤں میں تڑپتی رہی۔ گھر میں پیسے ہی کہاں تھے کہ علاج کے لئے بدین تک ہی پہنچ پاتے۔

میڈیا اور نقل بازی کا کینسر

ایسا نہیں کہ میں کوئی پہلا انسان ہوں جس کے خیالات پر نقب لگائی گئی ہو، مگر آخری ضرور بننا چاہتا ہوں

!مار ڈالو، کاٹ ڈالو

مجھے احساس ہوا کہ مجھے اس پر شدید غصہ آ رہا ہے اور میں اسے سچ بولنے پر چیخ چیخ کر ڈانٹنا چاہتا ہوں-

خطبہء وزیرستان

کس سازش کے تحت 'آپکو' بدنام کرنے کے لئے دھماکے کیے جاتے ہیں؟ کس صوبے کے مظلوم عوام آپکے بھائی ہیں؟