22 ستمبر, 2014 | 26 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

لاپتہ افراد پر اقوامِ متحدہ کا وفد پاکستان آئے گا

کراچی پریس کلب کے باہر مظاہرین بلوچستان میں لاپتہ افراد کی واپسی کے لئے مظاہرہ کررہے ہی۔ فائل تصویر سہیل یوسف / ڈان ڈاٹ کام

جینیوا: جبری یا غیرارادی طور پر پوشیدہ یا لاپتہ ہونے والے افراد سے متعلق اقوامِ متحدہ کا ورکنگ گروپ دس سے بیس ستمبردوہزار بارہ کے دوران پاکستان کی دعوت پر ملک کا دورہ کرے گا۔

اپنے مشن کے دوران اقوامِ متحدہ کے ماہرین جبری طور پر لاپتہ ہونے والے افراد کے بارے میں معلومات جمع کریں گے۔

دوسری جانب یہ گروپ ان اقدامات کا بھی جائزہ لے گا جس سے لوگوں کے لاپتہ ہونے کے عمل میں کمی لائی جاسکتی ہے۔ ساتھ ہی جبری طور پر لاپتہ ہونے والے افراد کی حقائق، ان کو فراہم کئے جانے والے انصاف اور ان کے تقاضوں پر بھی تفتیش کرے گا۔

اپنے ملک گیر دورے کے درمیان ورکنگ گروپ ،وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی سطح پر سرکاری افراد، سول سوسائٹی کے نمائیندوں، لاپتہ افراد کے لواحقین اور اقوامِ متحدہ کے متعلقہ اداروں کے نمائیندوں سے ملاقات کرے گا۔

وفد کے ہمراہ اقوامِ متحدہ کے ذیلی ادارے یواین ایچ سی آر سیکریٹیریٹ کے اراکین اور آزادانہ طور پر کام کرنے والے ماہرین بھی شامل ہوں گے۔ مشن دو ہزار تیرہ میں ہیومن رائٹس کونسل میں اپنی رپورٹ پیش کرے گا۔ پی پی آئی

اس حصے سے مزید

عمران، قادری پر مقدمات کی تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی تشکیل

دونوں رہنماؤں کیخلاف دہشت گردی کے مقدمات کی تحقیقات کیلیے ایس پی صدر کی صدارت میں ایک 6 رکنی کمیٹی قائم کی گئی ہے۔

خواتین پولیس کیلیے ہزار بلٹ پروف جیکٹس کی امریکی امداد

امریکی حکومت کی جانب سے سندھ پولیس کو دی گئی امداد میں چھ گاڑیاں، ایک ہزار بلٹ پروف جیکٹس اور ہیلمٹ بھی شامل ہیں۔

تربت: دو مسلح گروپوں میں تصادم سے 11 ہلاکتیں

مسلح افراد نے یعقوب بالگتری اور ان کے ساتھیوں پر اُس وقت فائرنگ کی جب وہ اپنے داماد کے گھر میں دعوت پر موجود تھے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

ذمہ داری ضروری ہے

سرکلر ڈیٹ کے لاعلاج مرض کی بدولت عالمی مالیاتی ادارے ہمارے توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی نہیں رکھتے۔

بلاگ

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-