21 اپريل, 2014 | 20 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

اے این پی کا سندھ حکومت سے علیحد گی کا اعلان

شاہی سید- اے پی پی فوٹو

کراچی: سندھ میں متعارف ہونے والے نئے بلدیاتی نظام کو یکسر مسترد کرتے ہوئے حکمراں اتحاد میں شامل عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) سندھ حکومت سے علیحدگی کااعلان کیا ہے۔

جمعہ کو اسلام آباد میں پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے بات چیت میں اے این پی کی رہنما بشری گوہر نے کہا کہ پارٹی نے سندھ کابینہ میں شامل واحد وزیرکوحکومت سے علیحدہ ہونے کی ہدایت جاری کردی ہے۔

سینیٹر زاہد حسین نے کہا کہ صوبائی حکومت سے علیحدگی پہلا قدم ہے اور اگر اے این پی کے تحفظات دور نہ کیے گئے توقیادت سے مشاورت کے بعد آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

اس موقع پر شاہی سید نے ایم کیوایم پر ‘دہشت گرد تنظیم’ ہونے کا الزام بھی عائد کیا ۔

انہوں نے  بلدیاتی آرڈیننس کو 'کالا قانون' اور عوام پر ظلم قرار دیا۔

اے این پی کا کہنا ہے کہ سندھ میں پیپلز لوکل گورنمنٹ آرڈیننس دو ہزار بارہ کے حوالے سے انہیں اعتماد میں نہیں لیا گیا۔

سینٹ اجلاس کے بائیکاٹ کے میڈیا سے گفتگو کرتے سینیٹر حاجی عدیل کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی سندھ میں فیصلہ کرنے کی اہلیت نہیں رکھتی، گورنر اور وزیراعلیٰ ہاﺅس میں سندھ کےخلاف سازشیں ہورہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آرڈیننس کی واپسی تک اے این پی اپنا احتجاج جاری رکھے گی۔

دوسری جانب، وزیراعلی سندھ قائم علی شاہ نے اے این پی کی ناراضگی دور کرنے کے لیے شاہی سید سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے ۔

وزیراطلاعات سندھ شرجیل میمن نے کہا ہے کہ اے این پی کے خدشات اور تحفظات دور کرنے کی کوشش کی جائے گی۔

متحدہ قومی موومنٹ کے رہنماء سید سردار احمد کا کہنا ہے کہ نئے سیاسی جماعتوں کو رائے قائم کرنے سے پہلے بلدیاتی آرڈیننس  کا جائزہ لینا چاہئے۔

 

اس حصے سے مزید

وزیرِ اعظم نے حامد میر حملے کی جوڈیشل تحقیقات کا حکم دیدیا

کمیشن کیلئے سپریم کورٹ سے درخواست کی جائے گی، قاتلوں کی اطلاع پر ایک کروڑ روپے انعام کا اعلان۔

اقوامِ متحدہ نے اپنے دوکارکن لاپتہ ہونے کی تصدیق کردی

اقوامِ متحدہ کی ذیلی تنظیم یونیسیف کے مقامی ارکان کراچی کے باہر ایک تفریحی مقام سے لاپتہ ہوئے ہیں۔

'دہشت گردی ختم کیے بغیر مضبوط دفاع کا قیام ناممکن'

مضبوط معیشت اور دہشت گردی ختم کیے بغیر ملکی دفاع کا قیام ناممکن ہے،وزیر اعظم کا کاکول اکیڈمی میں پاسنگ آؤٹ پریڈ سے خطاب


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

دنیاۓ صحافت: داستاں تک بھی نہ ہوگی داستانوں میں

ایک فوجی کی طرح صحافی کو بھی ہرگز اکیلا نہیں چھوڑا جاسکتا، یہ سوچنا کہ یہ ہماری جنگ نہیں، سراسر حماقت ہے-

2 - پاکستان کی شہری تاریخ ... ہمیں سب ہے یاد ذرا ذرا

بھٹو حکومت کے ابتدائی سالوں میں قوم کا مزاج یکسر تبدیل ہو گیا تھا، کیونکہ ملک ایک نئے پاکستان کی طرف بڑھ رہا تھا-

سچ، گولی اور بے بس جرنلسٹ

حامد میر پر حملہ ایک بار پھر صحافی برادری کی بے بسی کی طرف اشارہ کرتا ہے

دو قومی نظریہ اور ہندوستانی اقلیتیں

دو قومی نظریہ مسلمانوں اور ہندوؤں میں تو تفریق کرتا ہے لیکن دیگر اقلیتوں، خاص کر دلتوں کو یکسر فراموش کرتا ہے۔