02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

اے این پی کا سندھ حکومت سے علیحد گی کا اعلان

شاہی سید- اے پی پی فوٹو

کراچی: سندھ میں متعارف ہونے والے نئے بلدیاتی نظام کو یکسر مسترد کرتے ہوئے حکمراں اتحاد میں شامل عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) سندھ حکومت سے علیحدگی کااعلان کیا ہے۔

جمعہ کو اسلام آباد میں پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے بات چیت میں اے این پی کی رہنما بشری گوہر نے کہا کہ پارٹی نے سندھ کابینہ میں شامل واحد وزیرکوحکومت سے علیحدہ ہونے کی ہدایت جاری کردی ہے۔

سینیٹر زاہد حسین نے کہا کہ صوبائی حکومت سے علیحدگی پہلا قدم ہے اور اگر اے این پی کے تحفظات دور نہ کیے گئے توقیادت سے مشاورت کے بعد آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

اس موقع پر شاہی سید نے ایم کیوایم پر ‘دہشت گرد تنظیم’ ہونے کا الزام بھی عائد کیا ۔

انہوں نے  بلدیاتی آرڈیننس کو 'کالا قانون' اور عوام پر ظلم قرار دیا۔

اے این پی کا کہنا ہے کہ سندھ میں پیپلز لوکل گورنمنٹ آرڈیننس دو ہزار بارہ کے حوالے سے انہیں اعتماد میں نہیں لیا گیا۔

سینٹ اجلاس کے بائیکاٹ کے میڈیا سے گفتگو کرتے سینیٹر حاجی عدیل کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی سندھ میں فیصلہ کرنے کی اہلیت نہیں رکھتی، گورنر اور وزیراعلیٰ ہاﺅس میں سندھ کےخلاف سازشیں ہورہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آرڈیننس کی واپسی تک اے این پی اپنا احتجاج جاری رکھے گی۔

دوسری جانب، وزیراعلی سندھ قائم علی شاہ نے اے این پی کی ناراضگی دور کرنے کے لیے شاہی سید سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے ۔

وزیراطلاعات سندھ شرجیل میمن نے کہا ہے کہ اے این پی کے خدشات اور تحفظات دور کرنے کی کوشش کی جائے گی۔

متحدہ قومی موومنٹ کے رہنماء سید سردار احمد کا کہنا ہے کہ نئے سیاسی جماعتوں کو رائے قائم کرنے سے پہلے بلدیاتی آرڈیننس  کا جائزہ لینا چاہئے۔

 

اس حصے سے مزید

سپریم کورٹ : پندرہ پارلیمانی جماعتوں کو نوٹس جاری

ممکنہ ماورائے آئین اقدام سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ وہ صرف ایک مرتبہ عمران خان سے ملے ہیں۔

مظاہرین کی جانب سے پولیس فورس کو نفسیاتی دھچکا

ایس ایس پی آپریشن عصمت اللہ جونیجو کے مظاہرین کے ہاتھوں زخمی ہوکر ہسپتال پہنچنے سے پولیس اہلکاروں کی حوصلہ شکنی ہوئی ہے۔

بے گھر افراد کے لیے 1.5 ارب روپے کے فنڈز کی درخواست

فاٹا ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کا کہنا ہے کہ فنڈز کے اجراء میں تاخیر سے نقد امداد کی تقسیم کا پروگرام معطل ہوسکتا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔