28 جولائ, 2014 | 29 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

چین میں زلزلہ، پچاس افراد ہلاک

چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ژین ہوا نے حکام کے حوالے سے اموات کی تصدیق کی۔ اے ایف پی

بیجنگ: جنوب مغربی چین میں آنے والے زلزلے سے جمعہ کی شام تک  کم از کم پچاس افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق ہوگئی ہے۔

 زلزلے سے اب تک کم ازکم بیس افراد کے زخمی ہونے کی بھی تصدیق ہوچکی ہے۔

 جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب یکے بعد دیگرے زلزلے کے کئی جھٹکے آئے تھے۔ جن میں سے صرف ایک کی شدت ریکٹراسکیل پر پانچ اعشاریہ سات ریکارڈ کی گئی ہے۔

 چین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ژین ہوا نے حکام کے حوالے سے اموات کی تصدیق کردی ہے۔

 موصولہ اطلاعات کے مطابق جنوب مغربی چین میں واقع ین نان اور گوئز ہو صوبے کی سرحد پر پر گزشتہ رات مقامی وقت کے مطابق گیارہ بجے زلزلے کا سب سے شدید جھٹکا محسوس کیا گیا۔ جس کے بعد متعدد آفٹر شاکس محسوس کیے گئے۔

 ژین ہوا نے چائنا ارتھ کوئیک نیٹ ورک سینٹر کے حوالے سے بتایا کہ زلزلے کا محور زمین میں چودہ کلومیٹر کی گہرائی میں  تھا۔

  سینٹر کے حوالے سے ژین ہوا نے بتایا کہ زلزلے کے چار شدید نوعیت کے جھٹکے آئے تھے۔

  زیادہ تر اموات مکانات مندم ہونے کے باعث ملبے تلے دب کر ہوئیں۔

اس حصے سے مزید

افغانستان: بسوں سے اتار کر 15 افراد قتل

ایک شخص فرار ہو نے میں کامیاب ۔ ہلاک ہونے والوں میں گیارہ مرد، تین خواتین اور ایک بچہ شامل ہے۔

تائیوان میں مسافر طیارہ گر کر تباہ، 47 ہلاک

طیارے کو حادثہ پنگھو جزیرے پر پیش آیا جبکہ گیارہ زخمیوں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے،حکام

افغانستان میں دو بم دھماکے، 91 افراد ہلاک

پکتیکا میں کار بم دھماکے میں 89 افراد جبکہ کابل میں صدارتی ملازمین کی بس کے قریب دھماکے سے 2 افراد ہلاک ہوگئے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

جنگ اور ہوائی سفر

پرواز کرنے کا معجزہ، جو انسانی ذہانت کا خوشگوار مظہر ہے، انسان کے انتقامی جذبات اور خون کی پیاس کی نذر ہوگیا ہے

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

بلاگ

ترغیب و خواہشات: رمضان کا نیا چہرہ؟

کسی مقامی رمضان ٹرانسمیشن کو لگائیں اور وہ سب کچھ جان لیں جو اب اس مقدس مہینے کے نئے چہرے کو جاننے کے لیے ضروری ہے

نائنٹیز کا پاکستان -- 1

ضیا سے مشرف کے بیچ گیارہ سال میں کبھی کرپشن کے بہانے تو کبھی وسیع تر قومی مفاد کے نام پر پانچ جمہوری حکومتیں تبدیل ہوئیں

ٹوٹے برتن

امّی کا خیال ہے کہ ایسے برتن پورے گاؤں میں کسی کے پاس نہیں۔ وہ تو ان برتنوں کو استعمال کرنے ہی نہیں دیتی

مجرم کون؟

کچھ چیزیں ڈنڈے کے زور پہ ہی چلتی ہیں، پھر آہستہ آہستہ عادت اور عادت سے فطرت بن جاتی ہیں۔