30 اگست, 2014 | 3 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستان، ہندوستان رابطے بڑھانے کے خواہش مند

اسلام آباد: پاکستانی وزیر خارجہ حنا ربانی کھر اور ان کے ہندوستانی ہم منصب ایس ایم کرشنا- آن لائن فوٹو

اسلام آباد: پاکستان اور ہندوستان نے سرکاری سطح پر رابطوں کو بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

ہفتے کے روز اسلام آباد میں پاکستان کی وزیر خارجہ حنا ربانی کھر اور ان کے ہندوستانی ہم منصب ایس ایم کرشنا کے درمیان ملاقات ہوئی۔

ملاقات میں دونوں ممالک کے سیکرٹری خارجہ، ہائی کمشنر اور دیگر اعلٰی حکام نے بھی شرکت کی۔

ملاقات میں دونوں ملکوں کے درمیان گزشتہ سال بحال  ہونے والے جامع مذاکرات کے دوسرے دور میں زیرغور آنے والے امور پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

بات چیت کے دوران کشمیر، سیاچن، سرکریک، پانی کی تقسیم کے تنازعات، ایٹمی ہتھیاروں سے متعلق اعتماد سازی کے اقدامات، ویزا کے اجرا میں نرمی کے حوالے سے اقدامات اور ثقافتی و تعلیم میں تعاون سمیت مختلف امور پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔

اس موقع پر وزراء خارجہ نے دونوں ملکوں میں بات چیت کے عمل کو مزید آگے بڑھانے اور تعلقات میں بہتری لانے کیلیے تجاویز پر غور کے علاوہ بھی آئندہ مذاکرات کے روڈ میپ کا بھی تعین کیا گیا۔

 

اس حصے سے مزید

نواز شریف نے آرمی چیف سے 'معاونت' مانگی، آئی ایس پی آر

ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق حکومت نےآرمی چیف سے موجودہ صورتحال کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کا کہا تھا۔

آئی ایس پی آرکابیان حکومتی منظوری سے جاری ہوا، وفاقی وزیر داخلہ

چوہدری نثارنےکہاہےکہ حکومت نےکسی کو ضامن اور ثالث نہیں بنایا,آئی ایس پی آرکابیان وزیراعظم کودیکھانے کےبعدجاری کیاگیا۔

الطاف حسین کا بھی ٹیکنو کریٹ حکومت بنانے کا مطالبہ

ایم کیوایم کےقائد نےمطالبہ کرتےہوئے کہاہےکہ آئینی طریقہ ہے تو ٹھیک ہے ورنہ غیرآئینی طریقہ بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

اسلام آباد کا تماشا

عمران خان کو یہ تسلیم کرنا چاہیے کہ جوڈیشل کمیشن ایک کمزور وزیر اعظم کے اثر و رسوخ سے آزاد ہو کر تحقیقات کر سکے گا.

جمہوریت کے تسلسل کی ضرورت

حکومت نےکس قدر عجلت میں مذاکرات کا فیصلہ کیا، اس سے معاملات کے اوپر جی ایچ کیو کی گرفت کا اچھی طرح اندازہ ہوجاتا ہے۔

بلاگ

اجتماعی سیاسی قبر

فوج کو سیاسی معاملات میں شرکت کی دعوت دینا اس بات کا ثبوت ہے کہ سیاستدان سیاسی معاملات سے نمٹنے کی طاقت نہیں رکھتے۔

مووی ریویو: مردانی - پاورفل کہانی، بہترین پرفارمنس

بولی وڈ اداکار رانی مکھرجی اور طاہر بھاسن دونوں ہی اپنی بولڈ پرفارمنس کے لئے تعریف کے لائق ہیں۔

عظیم مقاصد، پر راستہ؟

اس طوفان کے نتیجے میں ان چاہی افرا تفری پھیل سکتی ہے، اسلیے اچھے مقاصد کے لیے ایسے راستے اختیار نہیں کیے جانے چاہییں۔

انقلاب معافی چاہتا ہے

ڈی چوک وہ سیاسی چراغ ہے جس کو اگر ضدی شہزادے کافی حد تک رگڑ دیں تو کچھ پتا نہیں اس میں سے انقلاب کا جن نکل ہی آئے۔