18 اپريل, 2014 | 17 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستان، ہندوستان رابطے بڑھانے کے خواہش مند

اسلام آباد: پاکستانی وزیر خارجہ حنا ربانی کھر اور ان کے ہندوستانی ہم منصب ایس ایم کرشنا- آن لائن فوٹو

اسلام آباد: پاکستان اور ہندوستان نے سرکاری سطح پر رابطوں کو بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

ہفتے کے روز اسلام آباد میں پاکستان کی وزیر خارجہ حنا ربانی کھر اور ان کے ہندوستانی ہم منصب ایس ایم کرشنا کے درمیان ملاقات ہوئی۔

ملاقات میں دونوں ممالک کے سیکرٹری خارجہ، ہائی کمشنر اور دیگر اعلٰی حکام نے بھی شرکت کی۔

ملاقات میں دونوں ملکوں کے درمیان گزشتہ سال بحال  ہونے والے جامع مذاکرات کے دوسرے دور میں زیرغور آنے والے امور پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

بات چیت کے دوران کشمیر، سیاچن، سرکریک، پانی کی تقسیم کے تنازعات، ایٹمی ہتھیاروں سے متعلق اعتماد سازی کے اقدامات، ویزا کے اجرا میں نرمی کے حوالے سے اقدامات اور ثقافتی و تعلیم میں تعاون سمیت مختلف امور پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔

اس موقع پر وزراء خارجہ نے دونوں ملکوں میں بات چیت کے عمل کو مزید آگے بڑھانے اور تعلقات میں بہتری لانے کیلیے تجاویز پر غور کے علاوہ بھی آئندہ مذاکرات کے روڈ میپ کا بھی تعین کیا گیا۔

 

اس حصے سے مزید

تحفظ پاکستان آرڈیننس سینیٹ میں پیش، اپوزیشن کا احتجاج

اپوزیشن کے شدید احتجاج کے باوجود وفاقی حکومت نے تحفظ پاکستان بل 2014 کو سینیٹ میں پیش کر دیا ہے۔

پاکستانی فوج قومی اثاثہ ہے، خواجہ آصف

وزیر دفاع نے گزشتہ بیان پر اپنی غلطی تسلیم کرتے ہوئے واضح کیا کہ مضبوط اور قابل احترام فوج قوم کا اثاثہ ہے۔

سپریم کورٹ نے نیب چیئرمین تقرری کو قانونی قرار دیدیا

دوسری جانب بیرسٹر اعتزاز احسن نے اپنے دلائل میں کہا کہ حکومت اور اپوزیشن دونوں ہی نیب چیئرمین کی تقرری پر متفق ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔