01 ستمبر, 2014 | 5 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان میں لاپتہ افراد بازیاب کرانے کا حکم

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فوٹو آن لائن

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے سیکرٹری دفاع کو بلوچستان میں لاپتہ افراد بازیاب کرانے کا حکم دینے کے علاوہ کہا ہے کہ تین روز میں غیرقانونی اسلحہ اور گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔

ہفتے کو سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے صوبے سے لاپتہ شخص کاہو بگٹی کو پیش نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سیکرٹری دفاع کو حکم دیا کہ لاپتہ افراد کو بازیاب کرایا جائے۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ جج اور پولیس افسران قتل کیے جارہے ہیں اور کوئی محفوظ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ صوبے میں بائیس سیکورٹی ایجنیساں کام کر رہی ہیں، ان کی فہرست فراہم کی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ جو کام شروع کیا ہے اسے پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔

اس موقع پر جسٹس جواد ایس خواجہ نے سیکرٹری دفاع کو حکم دیا کہ تین دن کے اندر غیرقانونی اسلحہ اور گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔

اس موقع پر سیکرٹری دفاع نے کہا کہ آئی ایس آئی اور ایم آئی کی طرف سے جاری کی گئی راہداریاں منسوخ کریں گے۔

گزشتہ سماعت میں سپریم کورٹ نے عبوری حکم جاری کرتے ہوئے اسلحہ اور گاڑیوں کی غیرقانونی راہداریاں منسوخ کرتے ہوئے ذمہ داروں کے خلاف مقدمات درج کرنے کا حکم دیا تھا۔

عدالت نے کمانڈر ایف سی ڈیرہ بگٹی کی چھٹیاں منسوخ کرکے پیش ہونے کا بھی حکم دیا تھا۔

چیف جسٹس نے آج اپنے ریمارکس میں کہا کہ اقوام متحدہ کا وفد لاپتہ افراد کے معاملے کا جائزہ لینے پاکستان پہنچ رہا ہے، معاملات درست کرلیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عالمی وفد کچھ کہے یا نہیں کہے لیکن مشاہدہ تو ضرور کرے گا۔

بعد ازاں، سماعت انیس ستمبر تک ملتوی کردی گئی، آئندہ سماعت اسلام آباد میں ہوگی۔

اس حصے سے مزید

بلوچستان میں بارہ مشتبہ عسکریت پسند کی ہلاکت کا دعویٰ

گومازئی میں موجود عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن شروع کیا تھا جس کے نتیجے میں بارہ مشتبہ شرپسند ہلاک ہوگئے۔

بلوچستان: مختلف علاقوں میں فائرنگ، چار افراد ہلاک

کوہلو، ڈیرہ مراد جمالی اور قلعہ عبداللہ میں نامعلوم مسلح افراد کی ٹارگٹ کلنگ سے دو افراد زخمی بھی ہوئے۔

بلوچستان: ذکری فرقے کے چھ افراد سمیت نو ہلاک

حکام کے مطابق مسلح افراد نے ذکری فرقے سے تعلق والے افراد پر اس وقت فائرنگ کردی جب وہ ایک عبادت گاہ میں موجود تھے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔