23 اگست, 2014 | 26 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان میں لاپتہ افراد بازیاب کرانے کا حکم

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فوٹو آن لائن

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے سیکرٹری دفاع کو بلوچستان میں لاپتہ افراد بازیاب کرانے کا حکم دینے کے علاوہ کہا ہے کہ تین روز میں غیرقانونی اسلحہ اور گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔

ہفتے کو سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے صوبے سے لاپتہ شخص کاہو بگٹی کو پیش نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سیکرٹری دفاع کو حکم دیا کہ لاپتہ افراد کو بازیاب کرایا جائے۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ جج اور پولیس افسران قتل کیے جارہے ہیں اور کوئی محفوظ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ صوبے میں بائیس سیکورٹی ایجنیساں کام کر رہی ہیں، ان کی فہرست فراہم کی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ جو کام شروع کیا ہے اسے پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔

اس موقع پر جسٹس جواد ایس خواجہ نے سیکرٹری دفاع کو حکم دیا کہ تین دن کے اندر غیرقانونی اسلحہ اور گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔

اس موقع پر سیکرٹری دفاع نے کہا کہ آئی ایس آئی اور ایم آئی کی طرف سے جاری کی گئی راہداریاں منسوخ کریں گے۔

گزشتہ سماعت میں سپریم کورٹ نے عبوری حکم جاری کرتے ہوئے اسلحہ اور گاڑیوں کی غیرقانونی راہداریاں منسوخ کرتے ہوئے ذمہ داروں کے خلاف مقدمات درج کرنے کا حکم دیا تھا۔

عدالت نے کمانڈر ایف سی ڈیرہ بگٹی کی چھٹیاں منسوخ کرکے پیش ہونے کا بھی حکم دیا تھا۔

چیف جسٹس نے آج اپنے ریمارکس میں کہا کہ اقوام متحدہ کا وفد لاپتہ افراد کے معاملے کا جائزہ لینے پاکستان پہنچ رہا ہے، معاملات درست کرلیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عالمی وفد کچھ کہے یا نہیں کہے لیکن مشاہدہ تو ضرور کرے گا۔

بعد ازاں، سماعت انیس ستمبر تک ملتوی کردی گئی، آئندہ سماعت اسلام آباد میں ہوگی۔

اس حصے سے مزید

تربت:سیکیورٹی فورسز کا آپریشن، 16عسکریت پسند ہلاک

فرنٹئیر کور کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن میں اسلحہ اور بارودی مواد بھی برآمد کیا ہے۔

سرحد پار سے عسکریت پسندوں کا حملہ، سیکورٹی اہلکار ہلاک

ترجمان فرنٹیئر کور کے مطابق ستر سے زائد دہشت گرد پاکستانی سرحد بلوچستان کے ضلع سیف اللہ میں داخل ہوئے۔

کوئٹہ: ایف سی کی کارروائی، بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد

ملزمان کے قبضے سے اینٹی ٹینک مائنز، ایم ایم میزائل، مارٹر رائنڈز، ہینڈ گرنیڈز اور ڈیٹو نیٹرز برآمد ہوئے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ڈرامے کی آخری قسط

اب اس آخری میلوڈرامہ کا جو بھی انجام ہو- اس نے پاکستانیوں کی آخری ہلکی سی امید کوبھی ریزہ ریزہ کردیا ہے-

پی ٹی آئی کی خالی دھمکیاں

جو دھمکیاں دی جا رہی ہیں، وہ حقیقت سے دور ہیں۔ ایسا کوئی راستہ موجود نہیں، جس سے پارٹی اپنی ان دھمکیوں پر عمل کر سکے۔

بلاگ

سیاست میں شک کی گنجائش

شکوک کے ساتھ ساتھ ان افواہوں کو بھی تقویت مل رہی ہے کہ عمران خان اور طاہرالقادری اصل میں اسٹیبلشمنٹ کے مہرے ہیں۔

پکوان کہانی : شاہی قورمہ

جو اکبر اعظم کے شاہی باورچی خانے کی نگرانی میں راجپوت خانساماؤں کے تجربات کا نتیجہ ہے۔

دفاعی حکمت عملی کے نقصانات

مصباح کے دفاعی انداز کے اثرات ہمارے جارحانہ انداز رکھنے والے بیٹسمینوں پر بھی پڑے ہیں

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔