25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

برطانوی شہزادے کو قتل کی دھمکی

شہزاہ ہیری- رائٹرز فوٹو

قندھار: طالبان نے نے دھمکی دی ہے کہ وہ چار سال کے وقفے کے بعد دوبارہ افغانستان آنے والے برطانیہ کے شہزادہ ہیری کو قتل کردیں گے۔

پیر کے روز عسکریت پسندوں کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے خبر رساں ادارے کو فون پر نامعلوم مقام سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ طالبان نے  شہزادہ ہیری پر ہلمند صوبے میں حملے کا ایک  'اہم منصوبہ' ترتیب دے رکھا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ اپنی پوری کوشش کریں گے کہ پرنس ہیری اور ہلمند میں موجود دوسرے برطانوی فوجیوں کو نشانہ بنایا جا سکے۔

مجاہد کے مطابق یہ ضروری نہیں کہ وہ ہیری کو اغواء کرکے ماریں ، بلکہ انہیں ہدف بھی بنا سکتے ہیں۔

مجاہد کا کہنا تھا کہ جو کوئی بھی ہمارے ملک میں جنگ میں حصہ لے گا، وہ ہمارا دشمن ہوگا اور ہم اسے مارنے کی پوری کوشش کریں گے۔

جنگی ہیلی کاپٹر کے پائلٹ ستائیس سالہ ہیری  اگلے چار ماہ افغانستان کے سب سے خطرناک صوبے ہلمند میں گزاریں گے۔

چار سال قبل افغانستان میں تعینات پرنس ہیری کی آمد کو خفیہ رکھا گیا تھا لیکن سیکورٹی خدشات کی بعد انہیں مختصر قیام کے بعد وطن روانہ کر دیا گیا تھا۔

اس مرتبہ برطانوی فوج نے ان کی آمد کو خفیہ رکھنے کے بجائے ان کی  تعیناتی کے بعد  کئی تصاویر اور وڈیو جاری کی ہیں۔

اس حصے سے مزید

افغانستان: بسوں سے اتار کر 15 افراد قتل

ایک شخص فرار ہو نے میں کامیاب ۔ ہلاک ہونے والوں میں گیارہ مرد، تین خواتین اور ایک بچہ شامل ہے۔

افغانستان کا پاکستان پر شدت پسند حملوں کی پشت پناہی کا الزام

ماضی میں بھی پاکستان ان الزامات کی ترید کرتا رہا ہے۔ افغان ترجمان نے اس حوالے سے کوئی ثبوت بھی پیش نہیں کیے۔

کابل: خود کش حملے میں تین غیر ملکی مشیر ہلاک

ابتدائی رپورٹس میں غیر ملکی مشیروں کی شہریت کے بارے تفصیلات موصول نہیں ہوسکی ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بلاگ

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔