23 اگست, 2014 | 26 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

اڑتالیس ہندوستانی ماہی گیر رہا

پولیس ہندوستان ماہی گیروں کو لے جاتے ہوئے- اے ایف پی فوٹو

کراچی: پاکستان نے پیر کو اڑتالیس ہندوستانی  ماہی گیروں کو رہا کردیا جس میں چودہ مسلمان ماہی گیر بھی شامل ہیں۔

حکومت  نے ہندوستان کے وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا کے تین روزے دورہ کے موقع پر 'جزبہ خیر سگالی'کے طور پر  اسّی میں سے اڑتالیس قیدیوں کو رہا کرنے کا اعلان کیا تھا۔

ان ماہی گیروں کو آج کراچی کی ملیر ڈسٹرکٹ جیل سے رہا کر دیا گیا۔

اس موقع پر انسپکٹر جنرل جیل خانہ جات ، پاکستان فشر فولک فورم اور لیگل ایڈ تنظیم ڈبلیو کے نمائندے بھی  موجود تھے۔

رہا ہونے والے ماہی گیر کوچ کے ذریعے سخت سیکیورٹی میں لاہور روانہ ہوگئے ہیں جہاں کل انہیں واہگہ بارڈر کے راستے ہندوستانی حکام کے حوالے کردیا جائے گا۔

آئی جی جیل خانہ جات محمود صدیقی نے اس موقع پر صحافیوں کو بتایا کہ ملیر جیل میں پڑوسی ملک کے صرف بتیس قیدیوں باقی رہ گئے ہیں، جنہیں جلد رہا کردیا جائے گا۔

پی ایف ایف کے سلطان میمن کا کہنا تھا کہ پاکستان نے اب تک ہندوستان کے چھ سو پچاس ماہی گیررہا کیے ہیں لیکن ہندوستان نے ابھی تک پاکستان کے ایک سو پچاس ماہی گیر رہا نہیں کیئے۔

اس حصے سے مزید

تحریک انصاف اور حکومت میں مذاکرات ختم، کل پھر ہوں گے

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے دھرنوں کے باعث موجودہ سیاسی صورتحال کیا رخ اختیار کرے گی۔

سیالکوٹ: انڈین فوج کی فائرنگ، خاتون سمیت دو افراد ہلاک

بلا اشتعال فائرنگ سے چار افراد زخمی اور متعدد مویشی ہلاک ہوگئے ہیں، جبکہ کئی مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

'وزیراعظم ممکنہ اندرونی بغاوت سے خبردار رہیں'

حکمران جماعت کی بھاری اکثریت کے باوجود پارٹی میں موجود 'میر جعفر و میر صادق' سے خطرہ ہے، جماعت اسلامی


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

کچھ جوابات

وزیر اعظم کا اعلان کردہ کمیشن مسئلے سلجھانے کے بجائے زیادہ الجھا دے گا۔

بڑھتی مایوسی

مایوسی تب اور بڑھتی ہے جب عوام دیکھتے ہیں کہ حکمران عوامی پیسے سے اپنے کام چلانے میں شرم بھی محسوس نہیں کرتے۔

بلاگ

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔

مووی ریویو: گارڈینز آف گیلیکسی ایک ویژول ٹریٹ ہے

جو یادوں کے ایسے دور میں لے جاتی ہے جب ایکشن کے بجائے مزاح کسی کامک کا سرمایہ اور اسے بیان کرنے کا ذریعہ ہوا کرتا تھا۔

اب مارشل لاء کیوں ناممکن؟

ایوب، ضیاء اور مشرّف، تینوں ہی مغربی قوّتوں کے جغرافیائی سیاسی کھیلوں میں اسٹریٹجک کردار کے بدلے جیتے تھے۔

عمران خان کے نام کھلا خط

گزشتہ ایک ہفتے کے واقعات پی ٹی آئی ورکرز کی تمام امیدوں اور توقعات کو بچکانہ، سادہ لوح اور غلط ثابت کر رہے ہیں۔