02 اکتوبر, 2014 | 6 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

اڑتالیس ہندوستانی ماہی گیر رہا

پولیس ہندوستان ماہی گیروں کو لے جاتے ہوئے- اے ایف پی فوٹو

کراچی: پاکستان نے پیر کو اڑتالیس ہندوستانی  ماہی گیروں کو رہا کردیا جس میں چودہ مسلمان ماہی گیر بھی شامل ہیں۔

حکومت  نے ہندوستان کے وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا کے تین روزے دورہ کے موقع پر 'جزبہ خیر سگالی'کے طور پر  اسّی میں سے اڑتالیس قیدیوں کو رہا کرنے کا اعلان کیا تھا۔

ان ماہی گیروں کو آج کراچی کی ملیر ڈسٹرکٹ جیل سے رہا کر دیا گیا۔

اس موقع پر انسپکٹر جنرل جیل خانہ جات ، پاکستان فشر فولک فورم اور لیگل ایڈ تنظیم ڈبلیو کے نمائندے بھی  موجود تھے۔

رہا ہونے والے ماہی گیر کوچ کے ذریعے سخت سیکیورٹی میں لاہور روانہ ہوگئے ہیں جہاں کل انہیں واہگہ بارڈر کے راستے ہندوستانی حکام کے حوالے کردیا جائے گا۔

آئی جی جیل خانہ جات محمود صدیقی نے اس موقع پر صحافیوں کو بتایا کہ ملیر جیل میں پڑوسی ملک کے صرف بتیس قیدیوں باقی رہ گئے ہیں، جنہیں جلد رہا کردیا جائے گا۔

پی ایف ایف کے سلطان میمن کا کہنا تھا کہ پاکستان نے اب تک ہندوستان کے چھ سو پچاس ماہی گیررہا کیے ہیں لیکن ہندوستان نے ابھی تک پاکستان کے ایک سو پچاس ماہی گیر رہا نہیں کیئے۔

اس حصے سے مزید

نوازشریف کی دھاندلی پکڑلی ہے،عمران خان

میانوالی جلسےسےخطاب میں انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو نہیں چھوڑیں گے،جب تک نوازشریف استعفی نہ دےدیں، دھرنا جاری رہےگا

پشاور: مسافر بس میں دھماکا، سات افراد ہلاک

دھماکے میں 11 افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے چار کی حالات تشویشناک بتائی جارہی ہے۔

پاکستان کے '89 فیصد افراد' انٹرنیٹ سے محروم

پاکستان میں گزشتہ برسوں کے دوران جدید ٹیکنالوجی کی ترقی کے باوجود تاحال 89 فیصد افراد انٹرنیٹ سے کٹے ہوئے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

جنوبی پنجاب کا کیس

پنجاب اس وقت دنیا کی سب سے بڑی وفاقی اکائیوں میں سے ہے۔ آبادی اور رقبے کے لحاظ سے یہ دنیا کے کئی ممالک سے بھی بڑا ہے۔

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

بلاگ

کیا آپ کی گائے برانڈڈ ہے؟

ہرعید الاضحیٰ کے ساتھ جانوروں پر شوبازی بڑھتی ہی جارہی ہے، جس سے اس مذہبی تہوار کی روحانیت خطرے میں پڑ گئی ہے۔

غیر ملکی سرمایہ کاری: حقیقت یا سراب؟

حکومت نے کئی ارب روپے سے میٹرو بس منصوبہ شروع کر رکھا ہے مگر عوام کو سیلاب سے بچانے کے لیے کوئی منصوبہ نہیں ہے۔

گو نواز گو!

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔