02 اکتوبر, 2014 | 6 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

ہلمند میں ایک برطانوی فوجی ہلاک

لندن میں وزارتِ دفاع کے بیان میں کہا گیا ہے کہ گاڑی بارودی سرنگ سے ٹکراگئی جس سے ایک برطانوی فوجی ہلاک ہوگیا۔ فائل تصویر اے ایف پی

لندن: افغانستان کے شورش زدہ صوبہ ہلمند میں سڑک کنارے نصب بم دھماکے میں ایک برطانوی فوجی ہلاک ہو گیا۔

یہ بات لندن میں وزارت دفاع نے اتوار کے روز کہی ۔

وزارت دفاع کا ایک بیان میں کہنا ہے کہ انتہائی افسوس کے ساتھ یہ اعلان کیا جاتا ہے کہ دی لائٹ ڈریگونز سے وابستہ ایک فوجی اہلکار ہلاک ہو گیا ہے. بیان میں مزید بتایا گیا کہ فوجی اس وقت ہلاک ہوا جب ایک گاڑی جس میں وہ سوار تھا جنوبی صوبہ ہلمند کے ضلع نہر سراج میں نصب کی گئی بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی ۔

اہلکار کی شناخت سے متعلق مزید کوئی تفصیلات نہیں بتائی گئی ۔ اس ہلاکت کے بعد افغانستان میں اکتوبر2011ء میں آپریشنز کے آغاز سے بعد سے اب تک ہلاک ہونیوالے برطانوی فوجیوں کی تعداد427ہوگئی ہے ان میں سے کم ازکم387فوجی لڑاکا کارروائیوں میں مارے گئے ۔

برطانیہ کے افغانستان میں9500فوجی تعینات ہیں جو کہ امریکہ کے بعد نیٹو قیادت میں بین الاقوامی سلامتی معاون فورس میں حصہ لینے والا دوسرا بڑا ملک ہے ۔

برطانوی فوجی وسطی ہلمند میں تعینات ہیں اور طالبان مزاحمت کاروں کیخلاف لڑائی اور مقامی سکیورٹی فورسز کو تربیت فراہم کررہے ہیں ۔

برطانیہ2014ء کے آخر تک اپنے تمام لڑاکا فوجیوں کو واپس بلانے کا منصوبہ رکھتا ہے ۔

اس حصے سے مزید

انڈیا، امریکا کا دہشت گردی کے خلاف مشترکہ کوششوں کا عہد

مشترکہ بیان میں پاکستان پر ممبئی حملوں کے مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچانے پر بھی زور۔

'مکہ کی تعمیر نو: ' تاریخی حقائق کو مٹا دیا گیا

ناقدین کےمطابق "یہ مکہ نہیں بلکہ اس سے الگ کوئی جگہ ہے، یہ ٹاور اور اس کی روشنیاں بالکل لاس ویگاس کا منظر پیش کرتی ہیں"۔

کابل میں دو خودکش بم دھماکے، چھ ہلاک

پولیس حکام کے مطابق چھ اہلکار ہلاک ہوئے ہیں، جبکہ طالبان کا دعویٰ ہے کہ ان حملوں میں کم سے کم بیس فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟