25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

ابراہیم حیدری: کشتی الٹنے سے 11 ماہی گیر ہلاک

کشتی کراچی کے ساحلی علاقے سے روانہ ہوئی تھی۔ فائل فوٹو

کراچی: ابراہیم حیدری کے کھلے سمندر میں رات گئے ماہی گیروں کی کشتی الٹنے سے گیارہ ماہی گیر ہلاک جبکہ متعدد لاپتہ ہو گئے۔

ذرائع کے مطابق کشتی پر 37 افراد سوار تھے جن میں سے پندرہ ماہی گیروں کو زندہ بچا لیا ہے جبکہ گیارہ کی لاشیں نکال لی ہیں، دیگر لاپتہ ماہی گیر وں کی تلاش کا کام جاری ہے۔

صوبائی وزیر فشریز زاہد بھرگھڑی کے مطابق میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی نے اب تک گیارہ افراد کی لاشیں نکال لی ہیں جبکہ بقیہ کی تلاش کا کام جاری ہے ۔

دوسری جانب ابراہیم حیدری کے مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ حادثے کی اطلاع ملتے ہی لوگوں کی بڑی تعداد اپنی مدد آپ کے تحت کشتیوں پر ماہی گیروں کی تلاش میں نکل پڑی کیونکہ اس وقت تک کوسٹ گارڈ یا میری ٹائم ایجنسی مدد کے لیے نہیں پہنچی تھی۔

کشتی کے کپتان اور احمد اور مالک عمر نے بتایا کہ کشتی پر 37 ماہی گیر سوار تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ ان افراد کا نام پتا درج نہیں کیا گیا تھا اور صرف زبانی طور پر گنتی کی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ کشتی ابراہیم حیدری سے گہرے سمندر میں داخل ہوتے ہی اونچی لہروں کا شکار ہو کر الٹ گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ اطراف میں اور بھی کشتیاں موجود ہونے کی وجہ سے پندرہ افراد کو زندہ بچالیا گیا جبکہ بقیہ افراد کو بچانے کی کوشش ناکام رہیں۔

اس حصے سے مزید

کامران خان نے بھی جیونیوز چھوڑ دیا

صحافی برادری سے تعلق رکھنے والے ذرائع کا کہنا ہے کہ کامران خان عنقریب آنے والے میڈیا گروپ ’’بول‘‘ سے وابستہ ہو رہے ہیں۔

کراچی: رینجرز کی کارروائی میں کالعدم تنظیم کا رکن ہلاک

رینجرز کے مطابق مبینہ دہشت گرد کامرہ ایئر بیس حملے میں ملؤث تھا۔ دوسری جانب شہر میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات جاری رہے۔

'این آر او کے تحت پندرہ سال تک مارشل لاء نافذ نہیں ہو سکتا'

شہلا رضا نے انکشاف کیا ہے کہ امریکہ، برطانیہ ، یواے ای اور جنرل پرویز اشفاق کیانی نےبھی اس کی گارنٹی دی تھی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-