02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

افغانستان میں خودکُش حملہ سولہ افراد ہلاک


دس ستمبر کو قندوز میں ہونے والے حملے کے بعد پولیس افسران جائے وقوعہ کا معائنہ کررہے ہیں۔ رائٹرز تصویر

قندوز، افغانستان: پیر کی صبح ایک گنجان علاقے میں خُودکُش جیکٹ پہنے ایک شخص نے خود کو دھماکے سے اس وقت اُڑالیا جب وہاں لوگوں کی آمدورفت جاری تھی۔

اس حملے میں دس پولیس اہلکار اور چھ عام شہری ہلاک ہوئے۔

قندوز میں پولیس چیف کے سربراہ سمیع اللہ قطرہ کے مطابق شہری علاقے میں خودکش حملہ اور کا ہدف پولیس والے تھے۔

قطرہ نے کہا کہ اس حملے میں دس پولیس اہلکار اور چھ شہری ہلاک ہوئے جبکہ تیس افراد زخمی ہوئے۔

فوری طور پر کسی بھی گروہ نے اس واقعے کی ذمے داری قبول نہیں کی ۔

واضح رہے کہ پیرکے روز ہونے والے اس حملے سے قبل ایک نوعمر لڑکے نے کابل میں نیٹو ہیڈ کوارٹرز پر خود کش حملہ کیا تھا جس میں چھ افراد سمیت چند بچے بھی ہلاک ہوئے تھے۔ طالبان نے اس حملے کی ذمے داری قبول کی تھی تاہم اس بات سے تردید کی تھی کہ حملے میں کم عمر بچہ استعمال ہوا تھا۔

اس حصے سے مزید

افغانستان: طالبان کے حملے، 4فوجی اور 3پولیس اہلکار ہلاک

صوبہ ننگر ہار میں خود کش حملے میں پولیس اہلکاروں کو نشانہ بنایا گیا، ہرات میں طالبان کے حملے میں فوجی اہلکار مارے گئے

جلال آباد: طالبان کا حملہ، چھ افراد ہلاک، پچاس زخمی

افغان حکام کے مطابق زخمیوں میں زیادہ تر عام شہری ہیں، جبکہ حملہ آوروں اور سیکیورٹی فورسز کے درمیان لڑائی جاری ہے۔

عبداللہ کے انکار پر افغان الیکشن کا آڈٹ معطل

ڈاکٹر غنی کی ترجمان کے مطابق انہیں اقوام متحدہ اور الیکشن کمیشن پر اعتماد ہے، اور وہ اس آڈٹ کے نتائج تسلیم کریں گے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماڈل ٹاؤن کیس: کچھ حماقتیں

حکمرانوں کے منع کرنے پر پولیس کی جانب سے مقتولین کی ایف آئی آر درج کرنے میں تاخیر کی وجہ سے معاملہ مزید خراب ہوا۔

بیوروکریٹس کی یونین

ذاتی مفادات کے لیے چوری چھپے سیاسی ہونے سے زیادہ بہتر ہے کہ ریاست کے وسیع تر مفاد کے لیے کھلے عام سیاسی ہوا جائے۔

بلاگ

ڈرامہ ریویو: 'لا'...الجھتے رشتوں کی کہانی

ڈرامہ پرفیکٹ نہیں بھی تھا تو بھی یہ ان ڈراموں میں سے ایک ضرور تھا جسے دیکھ کر بیزاری کا احساس نہیں ہوتا۔

مووی ریویو : 'راجہ نٹور لال' سٹیریو ٹائپنگ کا شکار ہوگئی

یہ فلم نہ تو مزاح پر پوری اترتی ہے اور نہ ہی اس میں اتنا تھرلر ہے جو اسے ذہن میں نقش کر دے۔

سستا خون: براۓ انقلاب

"انقلاب" سیاست چمکانے کے لیے ایک خوشنما لفظ بن چکا ہے، اور اسے مزید چمکانے کے لیے کارکنوں کا سستا خون بھی دستیاب ہے۔

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔