02 اکتوبر, 2014 | 6 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

سندھ: تین جماعتوں کا اپوزیشن بنچوں پر بیٹھنے کا فیصلہ

سندھ اسمبلی۔ فائل فوٹو

کراچی: سندھ میں نئے بلدیاتی نظام کے خلاف حکمراں اتحاد سے علیحدہ ہونے والی تین سیاسی جماعتوں نے صوبائی اسمبلی میں اپوزیشن بنچوں پر بیٹھنے کا فیصلہ کرلیا۔

 جن جماعتوں نے اپوزیشن بنچوں پر بیٹھنے کا فیصلہ کیا ہے، ان میں پاکستان مسلم لیگ فنکشنل، نیشنل پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ق شامل ہیں۔

 چند روز قبل پاکستان پیپلز پارٹی اور متحدہ قومی موومنٹ کے درمیان 'پیپلز میٹروپولیٹن کارپوریشن آرڈیننس2012  ' پر معاہدہ طے پانے کے بعد ان جماعتوں کے حکومت سے اختلاف پیدا ہوگئے تھے۔

 جس کے بعد عوامی نیشنل پارٹی سمیت ان جماعتوں نے سندھ کی مخلوط حکومت سے علیحدگی اختیار کرلی تھی۔

 ان جماعتوں نے آرڈیننس پر گورنر کے دستخط ہونے کے دوسرے روز ہی وزارتوں سے استعفے دے دیے تھے۔

 واضح رہے کہ مسلم لیگ ق اور عوامی نیشنل پارٹی وفاق میں بدستور پی پی پی کی حکومت کا حصہ ہیں تاہم وفاقی کابینہ میں شامل مسلم لیگ فنکشنل کے ایک وزیر نے پارٹی ہدایت پر استعفی دے دیا ہے۔

 اب تک یہ واضح نہیں کہ وزارت سے استعفیٰ دیے جانے کے بعد عوامی نیشنل پارٹی سندھ اسمبلی میں سرکاری بنچوں کا حصہ رہے گی یا وہ بھی دیگر جماعتوں کی پیروی کرتے ہوئے اپوزیشن بنچوں کا رخ کرے گی۔

واضح رہے کہ دو روز پہلے مسلم لیگ فنکشنل، مسلم لیگ ق اور نیشنل پیپلز پارٹی نے اعلان کیا تھا کہ وہ سندھ میں بلدیاتی نظام کے آرڈیننس پر اختلافات کے باعث پیپلز پاڑٹی کی مخلوط حکومت سے علیحدہ ہوئے ہیں۔

جمعرات کو سندھ میں قوم پرست جماعتیں آرڈیننس کے خلاف ہڑتال کرنے جارہی ہیں۔ مسلم لیگ ن نے بھی اس ہڑتال کی حمایت کی ہے۔

اس حصے سے مزید

کراچی: ایک گھنٹے میں پولیس پر دو حملے، دو اہلکار زخمی

پہلا واقعہ حسن اسکوائر کے قریب پیش آیا جہاں ایک پولیس موبائل کو موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں نے دستی بم سے نشانہ بنایا۔

ممتاز بھٹو بیٹے سمیت مسلم لیگ ن سے بے دخل

سندھ نیشنل فرنٹ کے چیئرمین ممتاز بھٹو نے دعویٰ کیا ہے کہ مسلم لیگ ن نے اُنہیں بیٹے سمیت پارٹی سے نکال دیا ہے

'پاکستان میں حقیقی جدوجہد غریب اور اشرافیہ کے درمیان ہے'

آغا خان یونیورسٹی کے فکری مباحثے میں ماہرین نے سوال کیا کہ کیا ہمیں جمہوری فلاحی ریاست بننا چاہیے یا سیکورٹی اسٹیٹ؟


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟