22 ستمبر, 2014 | 26 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

سندھ میں قوم پرستوں کی جزوی ہڑتال

عمرکوٹ میں ہڑتال-تصویر اے بی آریسر

عمرکوٹ: سندھ میں نئے بلدیاتی آرڈیننس کے خلاف سندھ بچاؤ کمیٹی کی کال پر ضلع عمر کوٹ میں مکمل ہڑتال ہے۔ شٹر ڈاؤن اور پہیہ جام کے باعث اسکولوں کالجوں میں بھی چھٹی دے دی گئی ہے۔

کئی شہروں میں قوم پرست جماعتوں کی طرف سے ریلیاں نکالی گئیں جس میں سندھ یونائیٹڈ پارٹی، سندھ ترقی پسند پارٹی اور نیشنل پیپلز پارٹی شامل ہیں۔

عمرکوٹ، پتھورو، کنری، اور سامارو ، ڈھورونارو، غلام نبی شاہ، شادی پلی، چھور ، کھوکھراپار سمیت  ضلع کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں کاروبار بند رہا۔

جبکہ میرپورخاص اور سامارو ، مٹھی، کنری و دیگر شہروں کی جانب جانے والی سڑکوں پر ٹرئفک بھی غائب رہا۔

شہروں میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔

قوم پرست رہنماؤں میرامان اللہ تالپر، محمد علی جونیجو، عبدالکریم منگریو، مجیب الرحمٰن آریسر و دیگر کا کہنا تھا کہ عوام نے نئے آرڈیننس کو رد کرنے کا فیصلہ سنادیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ کی عوام کسی بھی سندھ دشمن فیصلے پر عملدرآمد ہونے نہیں دے گا۔

واضح رہے کہ آج کی ہڑتال کی نواز لیگ، مسلم لیگ فنکشنل، تحریک انصاف، جی یو آئی نے بھی حمایت کی تھی لیکن کل کراچی میں ہونے والے حادثے کے بعد ہڑتال کی کال واپس لے لی تھی۔

البتہ حیدر آباد میں دکانیں اور کاروبار بند ہے لیکن حیدر چوک اور اطراف میں بازار کھلنا شروع ہوگئے ہیں۔

اس حصے سے مزید

خواتین پولیس کیلیے ہزار بلٹ پروف جیکٹس کی امریکی امداد

امریکی حکومت کی جانب سے سندھ پولیس کو دی گئی امداد میں چھ گاڑیاں، ایک ہزار بلٹ پروف جیکٹس اور ہیلمٹ بھی شامل ہیں۔

الطاف حسین کی سندھ میں چار صوبوں کی تجویز

انہوں نے سوال کیا کہ اگر سندھ ایک ہے تو چالیس اور ساٹھ فیصد کا کوٹہ کیوں مقرر کیا گیا ہے۔

کراچی: فائرنگ کے واقعات میں 6 افراد ہلاک

لانڈھی میں ہوٹل پرناشتہ کرنےوالے 3نوجوانوں کونشانہ بنایاگیا،پراناحاجی کیمپ،مومن آباداورلیاری میں ایک ایک شخص ہلاک ہوا


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

ذمہ داری ضروری ہے

سرکلر ڈیٹ کے لاعلاج مرض کی بدولت عالمی مالیاتی ادارے ہمارے توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی نہیں رکھتے۔

بلاگ

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-