22 اگست, 2014 | 25 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان کیس میں حکومت کا جواب مسترد

سپریم کورٹ ۔ رائٹرز تصویر

اسلام آباد: پاکستان کی سپریم کورٹ نے صوبہ بلوچستان میں بدامنی سے متعلق سیکریٹری داخلہ و خارجہ  کے مشترکہ جواب مسترد کرتے ہوئے کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی ہے۔

 بدہ کو پانچ رکنی بنچ نے بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کے دوران سیکریٹری داخلہ کے پیش نہ ہونے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انہیں فوراً پیش ہونے کی ہدایت جاری کی اور خبردار کیا کہ ان کی غیر حاضری پر گرفتاری کے احکامات جاری کیے جائیں گے۔

 جس پر سیکریٹری داخلہ عدالت میں پیش ہوئے اور بتایا کہ وہ بیمار ہیں اور چھٹی پر تھے تاہم عدالت کے حکم پر وہ بیماری کے باوجود حاضر ہوئے ہیں۔

 چیف جسٹس نے اس موقع پر موجود سیکریٹری دفاع اور داخلہ سے کہا کہ اس معاملے کو سنجیدگی سے لیا جائے۔

 قبل ازیں، سماعت کے دوران ایک موقع پر چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری اور اٹارنی  جنرل عرفان قادر کے درمیان سخت جملوں کا تبادلہ بھی ہوا۔

چیف جسٹس نے اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ وہ سپریم کورٹ کا حکم کیوں نہیں پڑھتے۔ جس پر اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ  آپ کا حکم بہت 'مبہم' ہوتا ہے۔

 کیس کی سماعت جمعرات تک ملتوی کردی گئی ہے۔

اس حصے سے مزید

آئندہ 48 گھنٹے’حساس‘ ہیں، وفاقی وزیر داخلہ

چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ فوج کو اس آزمائش سے نکالیں اور آپریشن کی طرف ان کو لے کر جائیں جہاں ان کی ضرورت ہے۔

نواں دن: اسلام آباد دھرنوں کے باعث سیاسی بے یقینی برقرار

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے دھرنوں کے باعث موجودہ سیاسی صورتحال کیا رخ اختیار کرے گی۔

تحریک انصاف کے اراکین قومی اسمبلی سے مستعفی

عمران خان سمیت پاکستان تحریک انصاف کے 34 اراکین قومی اسمبلی کے استعفے اسپیکر کےدفتر میں جمع کرا دیے گئے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

کچھ جوابات

وزیر اعظم کا اعلان کردہ کمیشن مسئلے سلجھانے کے بجائے زیادہ الجھا دے گا۔

بڑھتی مایوسی

مایوسی تب اور بڑھتی ہے جب عوام دیکھتے ہیں کہ حکمران عوامی پیسے سے اپنے کام چلانے میں شرم بھی محسوس نہیں کرتے۔

بلاگ

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔

مووی ریویو: گارڈینز آف گیلیکسی ایک ویژول ٹریٹ ہے

جو یادوں کے ایسے دور میں لے جاتی ہے جب ایکشن کے بجائے مزاح کسی کامک کا سرمایہ اور اسے بیان کرنے کا ذریعہ ہوا کرتا تھا۔

اب مارشل لاء کیوں ناممکن؟

ایوب، ضیاء اور مشرّف، تینوں ہی مغربی قوّتوں کے جغرافیائی سیاسی کھیلوں میں اسٹریٹجک کردار کے بدلے جیتے تھے۔

عمران خان کے نام کھلا خط

گزشتہ ایک ہفتے کے واقعات پی ٹی آئی ورکرز کی تمام امیدوں اور توقعات کو بچکانہ، سادہ لوح اور غلط ثابت کر رہے ہیں۔