24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

دہشتگردی کا خدشہ ہے، رحمان ملک

وفاقی وزیرِ داخلہ نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ آج دہشتگردی کا خدشہ ہے۔ فائل تصویر اے پی

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک نے کہا ہے کہ ملک کے کچھ شہروں میں ممکنہ دہشتگردی کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

انہوں کے کل کے اپنے اس بیان کو دوہرایا کہ پنجاب کی کالعدم تنظیموں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کو اسلام آباد میں داخل کرایا جا رہا ہے۔

اسلام آباد میں عشق رسول صلی اللہ علیہ  کانفرنس کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیرداخلہ رحمان ملک نے کہا کہ وفاقی دارالحکومت میں اج بھی فوج  ہائی الرٹ رہے گی۔

رحمان ملک کا کہنا تھا کہ اسلام اباد ،مری، چکوال، پشاور میں موبائل سروس معطل کردی گئی ہےاور اس سلسلے میں دو صوبائی چیف سیکریٹریز نے موبائل فون سروس بند کرنے کے لیے خطوط لکھے تھے۔

رحمان ملک نے نواز شریف پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف یوم عشق رسول کے موقع پر سیاست نہ کریں۔

اس سے قبل انہوں نے کہا کہ کل اسلام آباد میں ہونے والے پرتشدد مظاہرے پنجاب حکومت کی ایما پر ہوئے تھے۔

اس حصے سے مزید

نواز شریف کی سعودی ولی عہد شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز سے ملاقات

سعودی عرب مسلم دنیا میں بہت اہم کردار ادا کررہا ہے، وزیراعظم نواز شریف۔

این آر او کا علم صرف خاص لوگوں کو تھا، قریشی

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ اس وقت وزیر خارجہ ہونے کے باوجود وہ اس ڈیل سے بے خبر تھے۔

پاک و ہند سیکریٹری خارجہ 25 اگست کو ملیں گے

ترجمان وزارت خارجہ کے مطابق نوازشریف اور نریندر مودی نے مئی میں نئی دہلی میں اس ملاقات پر اتفاق کیا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

کیا بڑا بہتر ہے؟

ہم اپنی جنوب ایشیائی شناخت سے پیچھا کیوں چھڑانا چاہتے ہیں جو تاریخی اعتبار سے عرب کے مقابلے میں کہیں زیادہ مالامال ہے؟

بلاگ

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-

مووی ریویو: پیزا - پلاٹ اچھا ہے

اگرچہ سکرین پلے کافی کمزور ہے مگر فلم کی کہانی میں آنے والے موڑ دیکھنے والوں کی دلچسپی برقرار رکھتے ہیں۔

جہادی برائے فروخت

اگر اب بھی سمجھ نہ آئی تو پاکستان کا حشر بھی عراق و شام سے مختلف نہیں ہوگا۔