28 اگست, 2014 | 1 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

جنرل کیانی کے خلاف درخواست خارج

Gen-kayani-670
پاکستان فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی ۔ — فائل فوٹو

اسلام آباد: پاکستان کی ایک عدالت نے فوجی سربراہ  کی مدت ملازمت میں توسیع کےخلاف دائر درخواست خارج کر دی ہے۔

سابق فوجی افسران کی ایک نمائندہ سوسائٹی نے جنرل اشفاق پرویز کیانی کی مدت ملازمت میں توسیع کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخوست دائر کر رکھی تھی۔

درخواست گزار کرنل ریٹائرڈ انعام الرحمان کا مؤقف تھا کہ ساٹھ سال کی عمر کے بعد کوئی بھی فوجی عہدے پر نہیں رہ سکتا۔

ان کا کہنا تھا کہ صدرِ پاکستان کو آرمی چیف کے تقرر کا اختیار تو حاصل ہے لیکن وہ ان کی مدت ملازمت میں توسیع نہیں کر سکتے۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ اقبال حمیدالرحمان نے پیر کو درخواست کے قابل سماعت ہونے کے حوالے سے اپنے ریمارکس میں کہا کہ افواج پاکستان کے سروس امور اعلی عدالت میں نہیں اٹھائے جاسکتے۔

انعام الرحمان نے بارہ ستمبر کو دائر درخواست میں میں یہ موقف اختیار کیا تھا کہ ان کی سوسائٹی جنرل کیانی کی مدتِ ملازمت میں توسیع کو غیر اخلاقی اور غیر آئینی سمجھتی ہے۔

ان کا دعوی تھا کہ 1956 کے پاکستان آرمی ایکٹ میں کوئی ایسی شق موجود نہیں جس کے تحت کسی کو بھی عہدے کی معیاد جتنی توسیع دی جا سکے۔

ان کا کہنا تھا کہ فوج کے سربراہ کو تین سال کی مکمل توسیع دیتے ہوئے اس بات کا خیال نہیں رکھا گیا کہ اس سے ساٹھ سال کی عمر میں ریٹائرمنٹ کا قانون متاثر ہو گا۔

درخواست گزار نے یہ بھی دعوی کیا کہ جنرل کیانی نے دبئی میں طے پانے والے این آر او معاہدے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

ان کے بقول جنرل کیانی اس وقت کے صدر مشرف کے ہمراہ دبئی گئے تھے اور وہی اس معاہدے کے ضامن کے طور پر بھی سامنے آئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ صدر آصف علی زرداری نے جنرل کیانی  کی مدت ملازمت میں اسی لیے غیر قانونی توسیع کی تاکہ ضامن کا تحفظ کیا جا سکے۔

اس حصے سے مزید

وزیراعظم سے آرمی چیف کی ملاقات

تین دن میں ہونے والی دوسری ملاقات میں مذاکرات کا عمل بحال رکھنے کے لیے ضروری اقدامات پر اتفاق کیا گیا۔

'ماڈل ٹاؤن واقعے کی ایف آئی آر درج کے لیے تیار ہیں'

وفاقی وزیرِ ریلوے سعد رفیق کا کہنا ہے کہ ایف آئی آر میں وزیراعظم نواز شریف سمیت تمام 21 اعلیٰ حکام کو شامل کیا جائے گا۔

پندرھواں دن: طاہر القادری کا آج یومِ انقلاب منانے کا اعلان

طاہر القادری آج یومِ انقلاب جب کہ عمران خان آئندہ کے لائحہ عمل کے اعلان کریں گے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

متوازی سیاست

بعض لحاظ سے ان میں اور ان لوگوں میں کوئی بہت زیادہ فرق نہیں ہے جنھیِں وہ ہٹانا چاہتے ہیں-

انتخابی اصلاحات کی فوری ضرورت

پاکستان میں انتخابی عمل کوشفاف اور غیر متنازعہ بنانے کے لیے انتخابات کے آٹھ شعبوں میں اصلاحات کی ضرورت ہے۔

بلاگ

پاکستان کی نوجوان نسل اور غیرت بریگیڈ

"فحاشی" ایک دماغی بیماری ہے جس کا شکار ذہن عورت کو گھر کی دہلیز سے باہر دیکھ کر شدید 'صدمے' کا شکار ہو جاتا ہے۔

ڈی چوک، گدھا اور نا تجربہ کار حجام

آپ کے لیڈر رہیں یا چلے جائیں، یا رسی سے گدھا بندھا ہو یا نہیں، لیکن کسی نا تجربہ کار شخص کو اپنی حجامت مت بنانے دیجئے گا

دھرنے بمقابلہ جمہوریت

جمہوریت میں ہر بندے کی رائے برابر کی اہمیت رکھتی ہے۔ ممکن ہے کہ وہ سیاست دان بھی منتخب ہوجائیں، جو لیڈرشپ کے قابل نہیں۔

آزادی کے سائیڈ افیکٹس

اس قوم کا مزید آزادی کی بات کرنا بہت حیران کن ہے۔ یہ قوم تو آزادی کے سائیڈ افیکٹس کا شکار ہے۔