23 اپريل, 2014 | 22 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

رمشا کیس جوینائل کورٹ میں چلانے کا فیصلہ

لوگ رمشا کے گھر کے پاہر جمع ہیں۔ فوٹو اے پی

اسلام آباد: اسلام آباد کی ایک عدالت نے پولیس کو مبینہ طور پر توہین مذہب کی مرتکب رمشا کے جوینائل ٹرائل کے لیے چالان پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔

پیر کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج اسلام آباد جواد عباس نے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے مقدمہ کی سماعت جیل میں کرنے کے حکم کو مسترد کر دیا۔

عدالت نے پولیس کو جوینائل قوانین کے مطابق چالان خصوصی عدالت میں جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

یہی عدالت اب یکم اکتوبر کو بطور جوینائل کورٹ مقدمہ کی سماعت کرے گی۔

مزید براں، عدالت نے رمشا اور امام مسجد خالد جدون کی طلبی کے نوٹس جاری کرتے ہوئے گزشتہ سماعت کے موقع پر چالان تفتیشی آفیسر اور ڈسٹرکٹ اٹارنی میں پیدا ہونے والے تنازعہ کا معاملہ مجسٹریٹ کو بھجوا دیا ہے۔

وکیل استغاثہ نے میڈیا کو بتایا کہ اگرچہ پولیس نے رمشا کو بے گناہ قرار دیا ہے تاہم وہ ثبوت اور شواہد پیش کریں گے۔

واضح رہے کہ اسلام آباد کے نواحی گاؤں میرا جعفرکی رہائشی مسیحی بچی کو سولہ جولائی کو ایک مقامی شخص کی شکایت پر پولیس نے توہین مذہب کے قانون کے تحت گرفتار کیا تھا۔

سات ستمبر کو عدالت نے رمشا کو پانچ پانچ لاکھ کے دو مچلکوں پر اڈیالہ جیل سے ضمانت پررہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

آٹھ ستمبر کو جیل سے رہا کرنے کے بعد رمشا کو سخت حفاظتی نگرانی میں ہیلی کاپٹر کے ذریعے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا تھا۔

اس حصے سے مزید

مشرف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کی درخواست پر سماعت ملتوی

کل ہی نوٹس ملا ہے اسلئے کم ازکم 15 دن کا وقت دیا جائے، اٹارنی جنرل کی سندھ ہائی کورٹ سے درخواست۔

جیو کیخلاف حکومتی درخواست پر جائزہ کمیٹی قائم

کمیٹی پیمرا کے ممبران پرویز راٹھور، اسرار عباسی اور اسماعیل شاہ پر مشتمل، حتمی فیصلہ پیمرا بورڈ کے اجلاس میں ہوگا۔

اسلام آباد میں کچی آبادیوں پر کریک ڈاؤن

اسلام آباد کی قریب ایک درجن کے قریب کچی آبادیوں کے خلاف دارالحکومت کی انتظامیہ کی کارروائی جاری ہے۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

!مار ڈالو، کاٹ ڈالو

مجھے احساس ہوا کہ مجھے اس پر شدید غصہ آ رہا ہے اور میں اسے سچ بولنے پر چیخ چیخ کر ڈانٹنا چاہتا ہوں-

خطبہء وزیرستان

کس سازش کے تحت 'آپکو' بدنام کرنے کے لئے دھماکے کیے جاتے ہیں؟ کس صوبے کے مظلوم عوام آپکے بھائی ہیں؟

مووی ریویو: ٹو اسٹیٹس

عالیہ بھٹ کی بے ساختہ اداکاری نے اپنے اب تک بے شمار مداح پیدا کرلئے ہیں حالانکہ یہ ان کی تیسری فلم ہے۔

بیچارے مولانا حالی اور صحافت

'صحافت' لفظ کی طاقت کا بے جا استعمال نہیں بلکہ محرومیت کے شکار لوگوں کو طاقت بخشنا ہے