25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

احمد مختارکے بھائی ن لیگ میں شامل

وفاقی وزیر برائے پانی و بجلی احمد مختار۔ — اے پی پی

لاہور: وفاقی وزیر برائے پانی وبجلی چوہدری احمد مختار کے بڑے بھائی چوہدری احمد سعید نے مسلم لیگ ن میں شمولیت اختیارکرلی ہے۔

احمد سعید نے پیر کو لاہور میں وزیر اعلٰی پنجاب شہباز شریف اور نواز شریف سے ملاقات کی۔

ملاقات میں چوہدری احمد سعید نے باضابطہ طور پر مسلم لیگ ن میں شمولیت کا اعلان بھی کیا۔

اس موقع پرشہباز شریف کا کہنا ہے کہ چوہدری سعید کی شمولیت سے ن لیگ کی مقبولیت میں مزید اضافہ ہو گا اور یہ قدم وفاق کے ایوانوں میں کسی زلزلے سے کم نہیں۔

چوہدری سعید اس سے قبل پرویزمشرف کے دور میں پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائن اور پھر زرعی ترقیاتی بینک کے چئیرمین رہ چکے ہیں۔

انہوں نے 2005 میں زرعی ترقیاتی بینک کی سربراہی سے استعفی دے دیا تھا۔

وہ اس وقت جوتے بنانے والی ایک معروف کمپنی کے چیرمین کی حیثیت سے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

سیاسی پنڈتوں کے مطابق چوہدری سعید کی شمولیت سے ایک طرف ن لیگ کوگجرات میں استحکام حاصل ہوگا تو دوسری جانب پی پی پی کی طرف سے تاجروں، صنعت کاروں اور سرمایہ داروں کو پارٹی کی حمایت کے لیے کی جانے والی کوششوں کودھچکا لگے گا۔

اس حصے سے مزید

لانگ مارچ حتمی میدان جنگ ہو گا، عمران

'پی ٹی آئی کا 'آزادی مارچ' ٹی ٹوئنٹی نہیں بلکہ ٹیسٹ میچوں کی ایک سیریز ہو گا۔'

گجرات: زمیندار نے دس سالہ بچے کے دونوں بازو کاٹ دیے

معمولی رنجش پر زمیندار کے بیٹے نے تبسم شہزاد کو موٹر پر دھکا دیدیا جس کی زد میں آکر بچے کے دونوں بازو جسم سے جدا ہوگئے

آزادی مارچ، پی ٹی آئی کا حکمت عملی پوشیدہ رکھنے کا فیصلہ

پی ٹی آئی کے رہنما شاہ محمود قریشی نے کہا کہ حکومت نے ابھی تک رسمی طور پر پی ٹی آئی سے کوئی رابطہ نہیں کیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-