22 ستمبر, 2014 | 26 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

دس فیصد خواتین ووٹوں کی تجویز ناقابل عمل ہے ، ق لیگ

نگراں حکومت اٹھارہ مارچ کو قائم ہو گی، قمر زماں کائرہ۔ — اے پی پی فوٹو

اسلام آباد: حکمراں اتحاد میں شامل مسلم لیگ ق نے انتخابات میں خواتین کے کم از کم دس فیصد ووٹوں کی تجویز کو ناقابل عمل قرار دیا ہے۔

جمعرات کو چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) فخر الدین جی ابراہیم کی زیر صدارت کمیشن اور تمام بڑی سیاسی جماعتوں کا اہم اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔

اجلاس میں عام انتخابات کے لیے اٹھائے گئے مختلف اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ق لیگ کے صدر چوہدری شجاعت حسین نے کہا کہ نگراں وزیر اعظم کے لیے مشاورت کا عمل شروع نہیں ہوا۔

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کے پاس انتظامی اختیارات بھی ہونے چاہیں۔

پارٹی کے سیکرٹری جنرل مشاہد حسین نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے ووٹ کے حق کی حمایت کی لیکن ساتھ ہی وطن آکر حلقے میں ووٹ ڈالنے کی شرط بھی لگائی۔

مشاہد حسین نے بتایا کہ ان کی جماعت نے سیاسی جماعتوں کو ریاستی فنڈنگ کی بھی تجویز دی ہے۔

دوسری جانب، وفاقی وزیراطلاعات ونشریات قمرزمان کائرہ نے کہا کہ اٹھارہ مارچ کو نگراں حکومت کا قیام عمل میں آئے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ نگران حکومت پر اتفاق رائے نہ ہونے پر بھی انتخابات میں دیر نہیں ہو گی۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ حکومت شفاف انتخابات کرانا چاہتی ہے، جس کے لیے الیکشن کمیشن نے سیاسی جماعتوں سے تجویزیں طلب کی ہیں۔

انہوں نے الیکشن کمیشن کی طرف سے مشاورت کوخوش آئند قراردیا اور کہا کہ کمیشن کی نیت پر شک نہیں جاسکتا۔

کائرہ نے دعوی کیا کہ انتخابات میں حصہ لینے والےننانوے فیصد امیدواروں کو دہری شہریت کے قانون کا علم ہی نہیں تھا لہذا انہوں  نے ناسمجھی میں کاغذات نامزدگی پردستخط کردیے

اس حصے سے مزید

افغان حکومتی شراکت کے معاہدے کا پاکستان کی جانب سے خیر مقدم

دفترِ خارجہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اس معاہدے پر دستخط کو ایک مثبت پیش رفت سمجھتا ہے۔

انتخابی اصلاحات کمیٹی کی 2013 کے انتخابات میں مسائل کی نشاندہی

کمیٹی یہ جان کر حیران رہ گئی کہ 2013 کے عام انتخابات کے بیلٹ پیپرز کے لیے 66 سال پرانی مشینوں کو استعمال کیا گیا۔

ڈی چوک دھرنے، گرفتاری کے ڈر سے ورکرز کی زندگیوں کو خطرہ

مریضوں کو مناسب طبی امداد کی ضرورت ہے مگر وہ ہسپتال جانے کا خطرہ مول لینے کے لیے تیار نہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

پاکستان کی "مڈل کلاس" بغاوت

پاکستان کے مڈل کلاس لوگ ہی جمہوریت کے سب سے بڑے مخالف ہیں اور کچھ کیسز میں تو جمہوریت کی مخالفت بغاوت کی حد تک شدید ہے۔

!میرے پیارے اسلام آباد

میں آپ سے معافی چاہتا ہوں کہ میں نے آپ کی جانب دو دھرنے بھیجے ہیں، جنہوں نے آپ کا امن و سکون تباہ کر دیا ہے۔

بلاگ

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-

ڈرامہ ریویو: چپ رہو - حساس ترین موضوع پر بہترین پیشکش

زیادتی جیسے واقعات ہر وقت خبروں میں رہتے ہیں اس حوالے سے یہ ڈرامہ شعور اجاگر کرنے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

میں باغی ہوں

اس ملک میں کہیں قانون کی حکمرانی نہیں، ہر جگہ لوٹ مار مچی ہے- کسی کو قانون کا پاس نہیں- تبدیلی آئی تو سب کا احتساب ہوگا-