02 اکتوبر, 2014 | 6 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

گیلانی کو ایک اور دھچکہ

وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف۔— اے ایف پی

اسلام آباد: حکومت نے سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کی جانب سے اپنے آبائی شہر ملتان میں شروع کیے جانے والے ترقیاتی منصوبوں کو فنڈز کی فراہمی روک دی ہے۔

پبلک ورکس ڈیپارٹمنٹ ( پی ڈبلیو ڈی) کے ذرائع کے مطابق یہ فیصلہ نئے وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے علاقے گجر خان میں اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کے فوراً بعد کیا گیا تھا۔

پی ڈبیلو ڈی کے حکام نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے ملتان میں جاری منصوبوں کے فنڈز روکنے سے متعدد منصوبے ادھورے رہ گئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان ادھورے منصوبوں پر لاکھوں روپے خرچ ہو چکے تھے جن کے ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ حکومت نے پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام (پی ایس ڈی پی) کے تحت ملتان میں جاری منصوبوں کے لیے فنڈز مختص کیے تھے، تاہم موجودہ مالی سال کے دوران ان منصوبوں کے لیے فنڈز جاری نہیں کیے گئے۔

جب اس حوالے سے وزیر اعظم کے پریس سیکریٹری شفقت جلیل سے پوچھا گیا تو انہوں نے اپنی لاعلمی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ایسا ہونا بظاہر ناممکن لگتا ہے۔

وزیر اعظم کےترقیاتی پیکج کے تحت حکومت نے گزشہ مالی سال کے دوران ملک بھر میں مختلف ترقیاتی منصبوں کے لیے  تقریباً گیارہ ارب روپے جاری کیے تھے۔

ان منصوبوں پر عمل درآمد کرنے والے ادارے پی ڈبلیو ڈی کے اعداد و شمار کے مطابق ان میں سے سب سے زیادہ ترقیاتی فنڈز ملتان میں استعمال ہوئے۔

واضح رہے کہ عام طور پریہ فنڈز سینیٹرز اور قومی و صوبائی اسمبلیوں کے ارکان کو ان کے حلقوں میں ضرورت کی بنیاد پر مختص کیے جاتے ہیں جن پر عمل درآمد کی ذمہ داری پی ڈبلیو ڈی پر عائد ہوتی ہے۔

لیکن دستاویزات کے مطابق ملتان کی اڑتیس 'بااثر' شخصیات کو بھی چھ سو ساٹھ ملین روپے دیے گئے تاکہ وہ انہیں اپنی مرضی کے منصوبوں پر خرچ کر سکیں۔

دوسری جانب، موجودہ وزیر اعظم نے گجر خان میں ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے صرف پی ایس ڈی پی پر ہی انحصار نہیں کیا۔

پی ڈبلیو ڈی کی دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ حکومت نے علاقے میں ترقیاتی کاموں کے لیے تقریباً آٹھ ارب روپے منظور کر لیے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ملک میں مالی بحران کی صورت میں اگر حکومت پی ایس ڈی پی کے فنڈز میں کمی کرتی ہے تو بھی گجر خان کی اسکیموں پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

اس حصے سے مزید

اڈیالہ جیل کے زخمی کی حالت بدستور تشویش ناک

پولیس گارڈ کی فائرنگ سے زخمی ہونے والے توہین مذہب کے مبینہ برطانوی ملزم کو مزید ہسپتال میں رکھنے کی درخواست۔

اسلامک اسٹیٹ اسلام کے خلاف ہے: پاکستان علماء کونسل

کونسل نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ تشدد کو فروغ دینے والی آئی ایس جیسی انتہاء پسند تنظیموں میں شمولیت اختیار نہ کریں۔

جاویدہاشمی تحریک انصاف سے مستعفی،الیکشن میں مسلم لیگی حمایت حاصل

حکومتی جماعت کے وفد سے ملاقات کے بعد ان کا کہنا تھا کہ ایسی پارٹی کا کارکن نہیں رہنا چاہتا جو جمہوریت کے خلاف سازش کرے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟