17 اپريل, 2014 | 16 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

گیلانی کو ایک اور دھچکہ

وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف۔— اے ایف پی

اسلام آباد: حکومت نے سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کی جانب سے اپنے آبائی شہر ملتان میں شروع کیے جانے والے ترقیاتی منصوبوں کو فنڈز کی فراہمی روک دی ہے۔

پبلک ورکس ڈیپارٹمنٹ ( پی ڈبلیو ڈی) کے ذرائع کے مطابق یہ فیصلہ نئے وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے علاقے گجر خان میں اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کے فوراً بعد کیا گیا تھا۔

پی ڈبیلو ڈی کے حکام نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے ملتان میں جاری منصوبوں کے فنڈز روکنے سے متعدد منصوبے ادھورے رہ گئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان ادھورے منصوبوں پر لاکھوں روپے خرچ ہو چکے تھے جن کے ضائع ہونے کا خدشہ ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ حکومت نے پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام (پی ایس ڈی پی) کے تحت ملتان میں جاری منصوبوں کے لیے فنڈز مختص کیے تھے، تاہم موجودہ مالی سال کے دوران ان منصوبوں کے لیے فنڈز جاری نہیں کیے گئے۔

جب اس حوالے سے وزیر اعظم کے پریس سیکریٹری شفقت جلیل سے پوچھا گیا تو انہوں نے اپنی لاعلمی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ایسا ہونا بظاہر ناممکن لگتا ہے۔

وزیر اعظم کےترقیاتی پیکج کے تحت حکومت نے گزشہ مالی سال کے دوران ملک بھر میں مختلف ترقیاتی منصبوں کے لیے  تقریباً گیارہ ارب روپے جاری کیے تھے۔

ان منصوبوں پر عمل درآمد کرنے والے ادارے پی ڈبلیو ڈی کے اعداد و شمار کے مطابق ان میں سے سب سے زیادہ ترقیاتی فنڈز ملتان میں استعمال ہوئے۔

واضح رہے کہ عام طور پریہ فنڈز سینیٹرز اور قومی و صوبائی اسمبلیوں کے ارکان کو ان کے حلقوں میں ضرورت کی بنیاد پر مختص کیے جاتے ہیں جن پر عمل درآمد کی ذمہ داری پی ڈبلیو ڈی پر عائد ہوتی ہے۔

لیکن دستاویزات کے مطابق ملتان کی اڑتیس 'بااثر' شخصیات کو بھی چھ سو ساٹھ ملین روپے دیے گئے تاکہ وہ انہیں اپنی مرضی کے منصوبوں پر خرچ کر سکیں۔

دوسری جانب، موجودہ وزیر اعظم نے گجر خان میں ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے صرف پی ایس ڈی پی پر ہی انحصار نہیں کیا۔

پی ڈبلیو ڈی کی دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ حکومت نے علاقے میں ترقیاتی کاموں کے لیے تقریباً آٹھ ارب روپے منظور کر لیے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ملک میں مالی بحران کی صورت میں اگر حکومت پی ایس ڈی پی کے فنڈز میں کمی کرتی ہے تو بھی گجر خان کی اسکیموں پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

اس حصے سے مزید

خان پور: سکول وین کھائی میں گرنے سے متعدد بچے زخمی

زخمیوں کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا جارہا ہے جن میں سے پانچ کی حالت تشویشناک ہے: ریسکیو ذرائع

پیر کے کہنے پر ماموں کے ہاتھوں بھانجے قتل

پیر نے ملزم کو مراد پوری ہونے کے لیے مبینہ طور پر خون بہانے کا مشورہ دیا تھا۔

شیخوپورہ: وین حادثے میں چھ افراد ہلاک

حادثہ وین کے ٹائر پھٹنے سے پیش آیا، آٹھ افراد زخمی ۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

میڈیا کے چٹخارے

پاکستانی میڈیا کو جتنی زیادہ آزادی ہے اسکی اپروچ اتنی ہی جانبدارانہ ہے، عوام کی پولرائزیشن میں میڈیا کا بہت بڑا ہاتھ ہے

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔

ٹی ٹی پی نہیں تو پھر مذاکرات کیوں؟

عام آدمی کو صرف تحفظ چاہئے اور اگر مذاکرات یہ نہیں دے رہے تو ان کو مزید آگے بڑھانے سے کیا حاصل؟