23 ستمبر, 2014 | 27 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

ایران میں سائبر حملہ، انٹرنیٹ سروس معطل

سال 2010 میں ایرانی کے یورینیم افزودگی کے مراکز پر بھی سائبر حملہ کیا گیا تھا۔ فائل فوٹو

تہران: سائبر حملہ آوروں نے ایران کے مواصلاتی نظام کو نشانہ بنایا ہے جس سے پورے ملک میں انٹرنیٹ سروس معطل ہو گئی ہے۔

تیل برآمد کرنے والے دنیا کے پانچویں بڑے ملک ایران نے دو ہزار دس میں اسٹوکسنٹ کمپیوٹر وارم کی جانب سے یورینیم افزودگی کے مراکز پر حملے کے بعد سے سیکیورٹی انتہائی سخت کردی تھی، مذکورہ حملے کے بارے میں ایران کا کہنا تھا کہ یہ حملے اس کے مخالف ملکوں امریکا یا اسرائیل نے کروائے ہیں۔

سائبر اسپیس ہائی کونسل کے سیکریٹری  مہدی اخاوان بہابدی نے ایرانی لیبر نیوز ایجنسی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ روز ہمارے ملک کے انفراسٹرکچر اور مواصلاتی کمپنیز پر شدید حملہ کیا گیا جس کے باعث ہمیں انٹرنیٹ کی سروس محدود کرنی پڑی۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت ہمارے ملک میں مسلسل سائبر حملے ہو رہے ہیں۔ گزشتہ روز کئی گیگا بائٹس کے انٹرنیٹ ٹریفک نے ملک کے انٹرنیٹ انفراسٹرکچر پر حملہ کیا تھا جس کے باعث ملک کے میں انٹرنیٹ کی رفتار انتہائی سست ہو گئی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ حملے سوچے سمجھے منصوبے کے تحت کیے گئے ہیں اور ان کا اصل مقصد ملک کے جوہری، تیل اور انفارمیشن نیٹ ورک کو نشانہ بنانا تھا۔

مغربی ممالک ایران پر جوہری ہتھیار بنانے کا الزام عائد کرتے رہے ہیں جبکہ ایران نے ہمیشہ اس کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یورینیم کی افزودگی کا مقصد عوام کیلیے توانائی کا حصول ہے۔

اس حصے سے مزید

سنکیانگ: بم دھماکوں میں دو ہلاک، 'متعدد' زخمی

سنکیانگ کی مقامی حکومت کی ویب سائٹ کے مطابق اتوار کو شاپنگ ایریا سمیت تین مختلف مقامت پر دھماکے ہوئے۔

یمن: حوثی باغیوں کے ساتھ امن معاہدہ

اقوام متحدہ کی ثالثی میں صدر اور تمام اہم سیاسی جماعتوں نے معاہدے پر دستخط کیے۔

مودی امریکا دورے میں روزے رکھیں گے

مودی نو دنوں تک مسلسل روزے میں خود کو صرف چائے اور لیموکے شربت تک محدود رکھیں گے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

ذمہ داری ضروری ہے

سرکلر ڈیٹ کے لاعلاج مرض کی بدولت عالمی مالیاتی ادارے ہمارے توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی نہیں رکھتے۔

بلاگ

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-