25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

مسلم لیگ ن نے کل جماعتی کمیشن کا مطالبہ کردیا

مسلم لیگ ن کے رہنماء چوہدری نثار علی۔ فوٹو آن لائن

اسلام آباد: مسلم لیگ ن نے جمعے کو بلوچستان کے مسئلے پر کل جماعتی کمیشن تشکیل دینے کا مطالبہ کردیا ہے۔

پارلیمنٹ ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنماء چوہدری نثار علی کا کہنا تھا کہ بلوچستان پر تشکیل دیے جانے والے کل جماعتی کمیشن میں پارلیمنٹ کے اندر اور باہر تمام سیاسی جماعتوں کو شامل کیا جائے اور ناراض بلوچوں کو قومی دھارے میں شامل کیا جائے۔

 انہوں نے یوسف رضا گیلانی کے بیان کی تائید کی جس میں انہوں نے کہا تھا کہ پارلیمنٹ کا فیصلہ سازی کے عمل میں کوئی کردار نہیں ہے۔

 چوہدری نثار نے کہا کہ زرداری حکومت نے تمام اداروں کو پامال کردیا ہے۔

 واضح رہے کہ دو اکتوبر کو مسلم لیگ ن کے قائد میاں نوازشریف نے کہا تھا کہ بلوچستان کا مسئلہ سنگین نوعیت کا ہے اور صوبے میں صاف شفاف انتخابات یقینی بنانے کیلئے رکاوٹیں دور کی جائیں۔

 سپریم کورٹ بار کی سابق صدر عاصمہ جہانگیر سے ان کی والدہ کے انتقال پر تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا تھا کہ لاپتہ افراد پاکستانی ہیں اور ان کیلئے آواز بلند کرنا چاہیئے۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ دو ہزار چار کے بعد سے اب تک بلوچستان میں کئ سو افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ سینکڑوں گمشدہ ہیں جس کا الزام حساس اداروں پر عائد کیا جاتا ہے۔

اس حصے سے مزید

اسلام آباد: آئی ڈی پی کیمپ میں بچھوؤں کی بھرمار

ایک سرکاری افسر کے مطابق دارالحکومت میں آئی ڈی پیز کے لیے قائم واحد کیمپ میں جان لیوا بچھوؤں کی بھرمار ہے۔

'عدنان رشید کی گرفتاری کی تردید'

فوج نےحال ہی میں جس جنگجو کمانڈر کو گرفتار کیا وہ عدنان رشید نہیں بلکہ القاعدہ کا ایک سینئر ٹرینرتھا، سیکورٹی حکام۔

پاکستان کی صحافی فیض اللہ کی رہائی کیلئے صدر کرزئی سے اپیل

ٹی وی چینل اے آر وائی نیوز رپورٹر فیض اللہ خان کو افغان سیکورٹی فورسز نے اپریل میں صوبہ ننگرہار سے گرفتار کیا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-