26 جولائ, 2014 | 27 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت

چیف جسٹس آف پاکستان افتخار محمد چوہدری۔ فوٹو آن لائن

کوئٹہ: چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا ہے کہ اگر بلوچستان میں تمام پیسہ لگ جاتا تو آج وہاں امن و امان کا مسئلہ پیدا نہ ہوتا۔۔ ڈیرہ بگٹی کے اسّی فی صد لوگ گھروں کو لوٹ جائیں تو بڑی بات ہوگی۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا تین رکنی بینچ بلوچستان میں امن و امان سے متعلق درخواست کی سماعت کررہا ہے۔

 بلوچستان کے چیف سکریٹری اور آئی جی پولیس آج عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت کے استفسار پر چیف سکریٹری نے بتایا کہ تیس افسران بلوچستان میں آئے ہیں اور ان کی تعیناتی کی سمری چیف سکریٹری کو ارسال کردی گئی ہے۔۔

 عدالت نے چیف سکریٹری سے سمری طلب کی اور افسران کو متاثرہ علاقوں میں تعینات کرنے کی ہدایت کی ہے۔

 سماعت کے دوران ڈیرہ بگٹی سے بے گھر ہونے والوں کا مسئلہ بھی زیر بحث آیا جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ علاقے میں صوبائی حکومت کی عملداری نہیں ہے اور وہاں پر ایف سی کا کنٹرول ہے۔

 چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ اگر اسّی فیصد لوگ بھی علاقے میں واپس چلے جائیں تو بڑی بات ہوگی۔۔

 ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں بہت پیسہ آیا ہے اگر یہ صحیح انداز میں لگ جاتا تو آج امن و امان کا مسئلہ ہی پیدا نہ ہوتا۔

 مقدمہ کی سماعت ابھی جاری ہے۔

اس حصے سے مزید

کوئٹہ میں فائرنگ، دو پولیس اہلکار ہلاک

سریاب روڈ پر دو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کی۔

جھل مگسی میں' غیرت' کے نام پر لڑکی قتل

ضلع جھل مگسی کے آخند دانی گاؤں میں ایک باپ نے مبینہ طور پر'غیرت' کے نام پر اپنی بیٹی کو قتل کر دیا۔

بلوچستان: ڈھائی سال میں پہلا پولیو کیس

یونیسیف کے مطابق پولیو وائرس کا شکار 18 ماہ کی بچی کا خاندان رواں سال کراچی سے قلعہ عبداللہ منتقل ہوا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بلاگ

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔