17 اپريل, 2014 | 16 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

سندھ: پی پی پی رہنماؤں کے گھروں پر کریکر حملے

سندھ کے وزیرقانون ایازسومرو۔— فائل فوٹو

کراچی: صوبہ سندھ میں حکمران جماعت پاکستان پیپلزپارٹی کے پانچ رہنماؤں کے گھروں پر حملوں کے بعد ان کی سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔

منگل کی صبح پی پی پی کے صوبائی وزراء اور ارکان صوبائی اسمبلی کے گھروں پر کریکر بموں سے حملے کیے گئے۔

ڈان نیوز کے مطابق، شکارپور کے علاقے گڑھی یاسین میں وزیربلدیات سندھ آغا سراج درانی کے گھر پر بم حملے میں گھر کے عقبی دروازے اور دیواروں کو نقصان پہنچا۔

واقعہ کے بعد پولیس کی اضافی نفری تعینات کرکے تین رکنی تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دے دی گئی۔

لاڑکانہ میں وزیرقانون ایازسومرو کے گھر میں کریکر پھینکا گیا لیکن وہ پھٹ نہ سکا۔

دوسری جانب، حیدرآباد میں ٹنڈوالہیار سے منتخب ہونے والے رکن سندھ اسمبلی امداد پتافی کے گھر پر دستی بم پھینکا گیا، جس سےگھر کو جزوی نقصان پہنچاتاہم کوئی جانی ننقصان نہیں ہوا۔

گھر میں موجود افراد کا کہنا تھا کہ نامعلوم افراد دستی بم پھنک کر فرار ہوگئے۔

ادھر، میرپورخاص کے علاقے ڈگری میں پیپلزپارٹی کے رکن سندھ اسمبلی میرحیات تالپور کے گھر سے مشکوک بیگ ملا۔ بیگ کے ساتھ موجود پمفلیٹس پر سندھودیش لبریشن آرمی لکھا تھا۔

حیات تالپور کے گھر کے باہر پولیس کی اضافی نفری تعینات کردی گئی ہے۔

نوابشاہ میں رکن سندھ اسمبلی فصیح شاہ کے گھر سے پانچ کلو وزنی بم ملا، جسے ناکارہ بنادیا گیا۔

واضح رہے کہ ہفتے کی رات کو خیرپورمیں پیپلز پارٹی کے جلسے عام میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے نجی ٹی وی کے رپورٹر سمیت چھ افراد ہلاک جبکہ چار زخمی ہوئے تھے۔

جانوری گوٹھ میں رکن قومی اسمبلی اور وزیر اعلی کی بیٹی سیدہ نفیسہ شاہ کے جلسہ میں اس وقت نامعلوم افراد نے اندھا دھند فائرنگ کردی تھی جب وہ خطاب کرنے جارہی تھیں۔

اس حصے سے مزید

خیرپور میں گیس پائپ لائن دھماکے سے تباہ

پولیس کے مطابق دھماکے کے بعد سندھ کے مختلف شہروں میں گیس کی فراہمی معطل ہوگئی ہے۔

کراچی کی دوسری خاتون پولیس ایس ایچ او

پولیس حکام نے ادارے میں صنفی توازن قائم کرنے کے لیے ایک اور خاتون کو سٹیشن ہاؤس افسر تعینات کیا ہے۔

الطاف حسین نفرت اور تفریق ختم کرنے کے خواہاں

ایم کیو ایم کے قائد نے کہا کہ سندھی عوام کو اپنے حقوق کے لیے ایک ہو کر متحرک ہونا پڑے گا۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

میڈیا کے چٹخارے

پاکستانی میڈیا کو جتنی زیادہ آزادی ہے اسکی اپروچ اتنی ہی جانبدارانہ ہے، عوام کی پولرائزیشن میں میڈیا کا بہت بڑا ہاتھ ہے

ٹی ٹی پی نہیں تو پھر مذاکرات کیوں؟

عام آدمی کو صرف تحفظ چاہئے اور اگر مذاکرات یہ نہیں دے رہے تو ان کو مزید آگے بڑھانے سے کیا حاصل؟

جادو کا چراغ: نبض کے بھید اور ایک برباد محبت

بوڑھے دانا طبیب نے مختلف ناموں پر بدلتی نبض کو دیکھ کر لڑکی کی پراسرار بیماری کا علاج کیا-

سارے جہاں سے مہنگا - ریویو

فلم میں ایک اچھوتا خیال پیش کیا گیا ہے کہ کس طرح 'جگاڑ' کر کے ایک مڈل کلاس آدمی مہنگائی کا توڑ نکالتا ہے۔