17 ستمبر, 2014 | 21 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی میں فائرنگ سے چار افراد ہلاک

فوٹو اے ایف پی

کراچی: شہر قائد میں میں فائرنگ اور دیگر واقعات میں پولیس اہلکار اور گینگ وار کے اہم رکن  سمیت دس افراد ہلاک ہوگئے۔

فائرنگ کا تازہ واقعہ ابو الحسن اصفہانی روڈ پر پیش آیا جہاں نامعلوم افراد نے چار افراد کو ہلاک کر دیا۔ واقعے کے بعد علاقے میں کشیدگی پھیل گئی اور دکانیں اور کاروبار بند ہو گیا۔

نارتھ ناظم آباد میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ایک شخص چل بسا جبکہ بلدیہ ٹاؤن گلشن غازی میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے پولیس اہلکار کو ہلاک کردیا۔

نئی کراچی سیکٹر فائیو جے میں مسلح افراد نے گولیاں مار کر سیاسی جماعت کے کارکن کو موت کے گھاٹ اتار دیا جبکہ کھارادر میں بھی فائرنگ سے سلمان نامی شخص ہلاک ہوگیا۔

لانڈھی میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے سلیم ہلاک جبکہ دو افراد زخمی ہو گئے۔

ڈالمیا شانتی نگر میں پولیس نے کارروائی کے دوران مقابلہ کے بعد گینگ وار کے اہم رکن ستار بروہی کو ہلاک کردیا۔

اس حصے سے مزید

کراچی: 400 ارب روپے مالیت کی زمین کی غیرقانونی الاٹمنٹ

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے کہا ہے کہ نیب 600 ایکڑ اراضی وزیراعلٰی سندھ کے سابق سیکریٹری کو الاٹ کیے جانے کی تحقیقات کرے۔

کراچی: فائرنگ کے مختلف واقعات، پولیس اہلکاروں سمیت نو ہلاک

پولیس نے فرقہ وارانہ اور پولیس اہلکاروں کے قتل میں ملؤث کالعدم تنظیم کے پانچ دہشت گردوں کی گرفتاری کا دعویٰ کیا ہے۔

نئے صوبے نہ بنے تو پاکستان دنیا کے نقشے سے مٹ جائے گا، الطاف حسین

الطاف حسین کا کہنا ہے کہ اگر مزید صوبے نہ بنائے گئے تو پاکستان دنیا کے نقشے سے مٹ جائے گا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔

جب خاموشی بہتر سمجھی جائے

اس بات کو تسلیم کرنا ہو گا کہ برطانوی پاکستانیوں کے پاس جنسی استحصال پر بات کرنے کے لیے آزادی نہیں ہے۔