01 اکتوبر, 2014 | 5 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

طالبان کے اورکزئی کے سربراہ گرفتار، کالعدم تنظیم کی تردید

پشاور پولیس۔ فائل فوٹو

نوشہرہ: پولیس نے منگل کو تحریک طالبان پاکستان کے اورکزئی کے سربراہ قاری سعید کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے تاہم کالعدم تنظیم کے ترجمان نے اس بات کی تردید کی ہے۔

ڈان نیوز کے نمائندے ظاہر شاہ شیرازی کے مطابق قاری سعید کو پولیس نے نوشہرہ کی پبی تحصیل کے بندہ نبی گاؤں سے ایک چھاپے کے دوران گرفتار کیا۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ انہیں شبہ تھا کہ قاری سعید خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات میاں افتخار حسین کے بیٹے میاں راشد حسین کی دوسری برسی کی تقریب کو تباہ کرنا چاہتے ہیں۔

راشد حسین کو جولائی 2010 میں ضلع نوشہرہ میں ان کے آبائی علاقے پبی میں گولیوں کا نشانہ بنا کر ہلاک کردیا گیا تھا۔

دریں اثنا تحریک طالبان کے ترجمان احسان اللہ احسان نے نامعلوم مقام سے ڈان نیوز کے نمائندے ظاہر شاہ سے ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے قاری سعید کی گرفتاری کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ قاری سعید بالکل محفوظ ہیں۔

اس حصے سے مزید

پشاور: اسکول پر دستی بم حملے میں ٹیچر ہلاک

پشاور کے علاقے شبقدر میں ایک اسکول پر دستی بم حملے میں ایک ٹیچر ہلاک اور دو بچے زخمی ہو گئے۔

وادیِ تیراہ میں ریمورٹ کنٹرول بم دھماکا، پانچ افراد ہلاک

سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ دھماکا تیراہ میں شدت پسند گروپ لشکر اسلام کی بیس میں ہوا۔

ہنگو: متاثرین کے کیمپ میں دھماکا، سات افراد ہلاک

ہنگو میں شمالی وزیرستان سے نقل مکانی کر کے آںے والوں کے متاثرین کے کیمپ میں دھماکے سے سات افراد ہلاک ہو گئے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟