28 جولائ, 2014 | 29 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

اورکزئی ایجنسی میں سات مبینہ شدت پسند ہلاک

اورکزئی ایجنسی میں سیکیورٹی ایجنسیز کی کارروائی میں مبینہ طور پر سات شدت بسندوں کو ہلاک کردیا گیا ہے۔ فائل تصویر

پشاور: اورکزئی ایجنسی کے علاقے ماموزئی میں سیکیورٹی فورسز کی جانب سے شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی  س کے نتیجے میں مبینہ طور پر 7 شدت پسند ہلاک جبکہ ان کے 3 ٹھکانے تباہ ہو گئے۔

سرکاری ذرائع کے مطابق اپر اورکزئی ایجنسی کے علاقے ماموزئی میں جندری کلے اور بوٹاخیل میں سیکیورٹی فورسز نے شدت پسندوں کے مشتبہ ٹھکانوں پر گولہ باری کی جس کے نتیجے میں 7 شدت پسند ہلاک اور ان کے 3 ٹھکانے تباہ ہو گئے۔

اورکزئی ایجنسی میں شدت پسندوں کے خلاف جاری آپریشن میں اب تک 122 سیکیورٹی اہلکار جان بحق اور 172 زخمی ہو چکے ہیں جبکہ 638 شدت پسند ہلاک اور 339 زخمی ہو چکے ہیں۔ آپریشن کے دوران 92 فیصد سے ذیادہ علاقہ شدت پسندوں سے خالی کرایا جا چکا ہے۔

اس حصے سے مزید

لوئر دیر: سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ سے ایک خاتون ہلاک

سرچ آپریشن کے دوران ایک گھر پر چھاپے میں سیکیورٹی فورسز کے تین اہلکار جبکہ حملہ آوروں میں سے ایک شخص زخمی ہوا ہے۔

کے پی اور فاٹا میں آج عید

پشاور سمیت صوبے کے مختلف شہروں میں نمازِ عید کے اجتماعات میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

اسلام آباد میں فوج کی طلبی، سیاسی جماعتوں کی مخالفت

خیبر پختونخوا میں قومی سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے کا کہنا ہے کہ یہ اقدام ملک میں مارشل لاء کو دعوت دینے کے مترادف ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

جنگ اور ہوائی سفر

پرواز کرنے کا معجزہ، جو انسانی ذہانت کا خوشگوار مظہر ہے، انسان کے انتقامی جذبات اور خون کی پیاس کی نذر ہوگیا ہے

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

بلاگ

ترغیب و خواہشات: رمضان کا نیا چہرہ؟

کسی مقامی رمضان ٹرانسمیشن کو لگائیں اور وہ سب کچھ جان لیں جو اب اس مقدس مہینے کے نئے چہرے کو جاننے کے لیے ضروری ہے

ٹوٹے برتن

امّی کا خیال ہے کہ ایسے برتن پورے گاؤں میں کسی کے پاس نہیں۔ وہ تو ان برتنوں کو استعمال کرنے ہی نہیں دیتی

مجرم کون؟

کچھ چیزیں ڈنڈے کے زور پہ ہی چلتی ہیں، پھر آہستہ آہستہ عادت اور عادت سے فطرت بن جاتی ہیں۔

نائنٹیز کا پاکستان -- 1

ضیا سے مشرف کے بیچ گیارہ سال میں کبھی کرپشن کے بہانے تو کبھی وسیع تر قومی مفاد کے نام پر پانچ جمہوری حکومتیں تبدیل ہوئیں