24 اپريل, 2014 | 23 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

شدت پسندوں سے جنگ کے لئے قومی اتفاقِ رائے ضروری ہے

صدرِ پاکستان آصف علی زرداری۔ فائل تصویر

اسلام آباد: صدرِ پاکستان آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ عسکریت پسندوں سے جنگ کے لئے قومی اتفاقِ رائے ضروری ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق صدر زرداری نے کہا کہ ہمیں ان ( عسکریت پسندوں) کی جوابی کارروائی نے نبرد آزما ہونے کیلئے اپنی صلاحیتوں کا جائزہ لینا چاہئے۔

اسلام آباد میں منعقدہ میڈیا، عسکریت پسندی اور شفاف انتخابات کے موضوع پر ساوتھ ایشیا فری میڈیا ایسوسی ایشن (سیفما ) کے تحت ہونے والی کانفرنس میں انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کیخلاف جنگ قومی اتفاقِ رائے کے ساتھ لڑی جائے گی۔

' ہم اس امر پر متفق ہیں کہ دہشتگردوں کے خلاف کارروائی ضروری ہے لیکن کیا ہم پلٹ کر آنے والے وار کیلئے تیار بھی ہیں؟ صدر نے سوال کیا۔

اگر ہم خود اپنے درمیان مفاہمت پیدا نہیں کرسکے تو ہم دیگر ممالک کے ساتھ بھی ہم آہنگی پیدا نہیں کرسکیں گے۔ انہوں نے کہا۔

صدر زرداری نے کہا کہ حالیہ صورتحال میں یوں لگتا ہے کہ اپوزیشن پارٹیوں کے ساتھ  اتفاقِ رائے کی بات کرنا بے کار ہے۔

زرداری نے کہا کہ جب (دہشگردی کیخلاف) جنگ چھڑی تو کئی ممالک نے آگے بڑھ کر اپنی مدد کے وعدے کئے لیکن صرف چین ایسا ملک تھا جس نے  اس جنگ میں حقیقی معنوں میں پاکستان کی مدد کی۔

انہوں نے کہا کہ 'ایک صدر کی حیثیت سےمیں قوم کے سامنے جوابدہ' ہوں اور انہوں نے ساتھ ہی میڈیا سے درخواست کی کہ وہ تصویر کے دونوں رخ دکھائے کہ نہ صرف پاکستان بلکہ پوری دنیا میں مالی بحران آیا ہوا ہے۔

انہوں نے نے ملالئے یوسفزئی سمیت دہشتگردی سے متاثر ہونے والے ہر بچے کے ساتھ افسوس کا اظہار کیا۔

انہوں نے سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے قتل کے بعد اس پر عوامی ردِ عمل کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کوئی وکیل ان کا کیس لڑنے کیلئے تیار نہیں تھا اور ان کے اہلِ خانہ سے بھی بہت کم لوگوں نے اپنی مدد اور تعاون کا اظہار کیا۔

اس حصے سے مزید

مشرف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کی درخواست پر سماعت ملتوی

کل ہی نوٹس ملا ہے اسلئے کم ازکم 15 دن کا وقت دیا جائے، اٹارنی جنرل کی سندھ ہائی کورٹ سے درخواست۔

جیو کیخلاف حکومتی درخواست پر جائزہ کمیٹی قائم

کمیٹی پیمرا کے ممبران پرویز راٹھور، اسرار عباسی اور اسماعیل شاہ پر مشتمل، حتمی فیصلہ پیمرا بورڈ کے اجلاس میں ہوگا۔

اسلام آباد میں کچی آبادیوں پر کریک ڈاؤن

اسلام آباد کی قریب ایک درجن کے قریب کچی آبادیوں کے خلاف دارالحکومت کی انتظامیہ کی کارروائی جاری ہے۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (2)

zafarhassan
21 اکتوبر, 2012 19:32
i m thankful to the dawn that they help me a lot i have been in search of websites for translating urdu into english but the dawn.com is the first site that fulfills my requirements thanks.....!
محمد عارف
22 اکتوبر, 2012 01:40
صدر صاحب جو گورنر تاثیر نے کیا ۔ کیا وہ ٹھیک تھا ۔
مقبول ترین
بلاگ

مقدّس ریپ

دو دن وہ اسی گاؤں میں ماں کے بازؤں میں تڑپتی رہی۔ گھر میں پیسے ہی کہاں تھے کہ علاج کے لئے بدین تک ہی پہنچ پاتے۔

میڈیا اور نقل بازی کا کینسر

ایسا نہیں کہ میں کوئی پہلا انسان ہوں جس کے خیالات پر نقب لگائی گئی ہو، مگر آخری ضرور بننا چاہتا ہوں

!مار ڈالو، کاٹ ڈالو

مجھے احساس ہوا کہ مجھے اس پر شدید غصہ آ رہا ہے اور میں اسے سچ بولنے پر چیخ چیخ کر ڈانٹنا چاہتا ہوں-

خطبہء وزیرستان

کس سازش کے تحت 'آپکو' بدنام کرنے کے لئے دھماکے کیے جاتے ہیں؟ کس صوبے کے مظلوم عوام آپکے بھائی ہیں؟