02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

نوشہرہ میں دھماکہ، دو زخمی

تصویر میں بم دھماکے کے بعد تباہ شدہ موٹر سائیکل نظر آرہی ہے۔ فائل تصویر

نوشہرہ: ضلع نوشہرہ میں واقع جہانگیرہ صوابی روڈ پر پیر کے روز دھماکا ہوا ۔

دھماکے میں دو افراد زخمی ہوئے لیکن ابھی تک کسی بھی جانی نقصان کی اطلاح نہیں ہے۔

خبر کے مطابق بارودی مواد نجی بینک کے قریب موٹر سائیکل میں نصب تھا۔

زخمیوں کو فوری طور پر قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

پولیس نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ بم دھماکے کا نشان خیبرپختوانخوا کے وزیراعلٰی امیر حیدر خان ہوتی کا قافلہ تھا۔

وزیر اعلی خیبر پختونخوا امیر حیدر خان ہوتی کے قافلے کو صوابی جہانگیرہ روڈ پر اس وقت موٹر سائیکل میں نصب ریموٹ کنٹرول بم سے نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی جب وہ صوابی چوک میں سڑک کا افتتاح کرنے کے لئے جا رہے تھے، وزیر اعلی کا قافلہ دھماکے سے قبل وہاں سے گزر کر آگے نکل گیا جس کے باعث وہ محفوظ رہے ۔

پولیس ذرائع کے مطابق دھماکے میں2راہگیر زخمی ہوئے جبکہ دھماکے میں ایک کلو بارودی مواد استعمال کیا گیا۔ دھماکے کے بعد پولیس نے متعدد مشکوک افراد کو بھی گرفتار کر لیا۔

وزیر اعلی امیر حیدر خان ہوتی نے دھماکے کے باوجود بھی سڑک کا افتتاح کیا اور جلسہ عام سے خطاب بھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں سے اب بھی مذاکرات کے لئے تیارہیں تاہم اگر وہ مذاکرات پر آمادہ نہیں تو ہم بھی وطن کی بقا کا جنگ جاری رکھے گے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے پہلے بھی قربانیاں دی ہیں اور مزید قربانیوں کے لئے بھی تیار ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم امن کے خواہاں ہیں اور امن کے پیرکار ہیں۔

اس حصے سے مزید

پروفیسر اجمل کے بدلے تین طالبان قیدی رہا کرائے، مُلا فضل اللہ

اسلام آباد میں 30 ہزار لوگوں نے حکومت کو یرغمال بنا لیا ہے جس سے طالبان کا کام آسان ہو گیا،سربراہ تحریک طالبان پاکستان

۔’’ضرب عضب‘‘: 32 دہشت گرد ہلاک، 3ٹھکانے تباہ

آئی ایس پی آر کے مطابق بارودی مواد سے بھری ہوئی 23 گاڑیاں اور اسلحے کے 4 ذخائر بھی تباہ کر دیئے گئے ہیں۔

کوہاٹ : ایک ہی خاندان کے 5 افراد قتل

نامعلوم افراد نے ایک گھر میں گھس کر فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں میاں، بیوی، دو بیٹیاں اور ایک بیٹا ہلاک ہوگیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔